عراقی فضائیہ کا داعش کے کمانڈروں پر حملہ ، البغدادی کا حال نامعلوم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراقی فضائیہ نے سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے ایک اجلاس پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں تنظیم کے تیرہ سرکردہ کمانڈروں کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔

عراق کی مشترکہ آپریشنز کمان کی جانب سے سوموار کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق داعش کے خود ساختہ خلیفہ ابوبکر البغدادی بھی ممکنہ طور پر اس اجلاس میں شریک تھے لیکن بیان میں حتمی طور پر یہ نہیں بتایا گیا ہے کہ آیا البغدادی بھی فضائی بمباری کی زد میں آئے ہیں یا نہیں۔

البتہ بیان میں یہ کہا گیا ہے کہ ایک انٹیلی جنس سیل نے ابوبکر البغدادی کی شام میں داعش کے مضبوط گڑھ الرقہ سے سرحد پار عراق کے مغربی قصبے القائم میں ایک قافلے کے ذریعے منتقلی کی مانیٹرنگ کی ہے۔

آپریشنز کمان کے بیان کے مطابق عراقی فضائیہ کے لڑاکا ایف 16 جیٹ نے 11 فروری کو داعش کے سرکردہ کمانڈروں کے ایک اجلاس پر بمباری کی تھی لیکن اس میں یہ واضح نہیں کیا گیا ہے کہ آیا بغدادی بھی وہاں موجود تھے یا نہیں۔

اجلاس کی جگہ پر اس براہ راست فضائی حملے میں داعش کے تیرہ کمانڈر ہلاک ہوگئے تھے۔بیان میں ان کے ناموں کی ایک فہرست بھی دی گئی ہے لیکن ان میں ابوبکر البغدادی کا نام شامل نہیں ہے۔

عراقی فوج کا کہنا ہے کہ اسی علاقے میں کارروائی کے دوران میں فضائی حملوں میں داعش کے دسیوں اور جنگجو بھی ہلاک ہوگئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں