مسئلہ فلسطین.. واشنگٹن دو ریاست کے بطور بنیادی حل سے دست بردار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی انتظامیہ کےا یک اعلی ذمے دار نے منگل کے روز کہا ہے کہ واشنگٹن اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے درمیان امن معاہدے تک پہنچنے کے لیے اب دو ریاستی حل کو بنیاد شمار کرنے کا مزید پابند نہیں رہا۔

اسرائیلی وزیراعظم کے وہائٹ ہاؤس کے حالیہ دورے کے بعد سامنے آنے والا یہ موقف اس معاملے میں امریکا کی تاریخی ثابت قدمی سے متصادم ہے۔

وہائٹ ہاؤس کے مذکورہ سینئر اہل کار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ امریکی انتظامیہ آج کے بعد اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان تنازع کے حل کے واسطے کسی بھی معاہدے کی شرائط ڈکٹیٹ کرانے کی کوشش نہیں کرے گی.. بلکہ فریقین کے درمیان طے پائے جانے والے کسی بھی معاہدے کی حمایت کرے گی۔

اہل کار نے مزید کہا کہ "دو ریاستوں کی بنیاد پر ایسا حل جس سے امن نہ آ سکے اس کو کوئی بھی نہیں چاہتا"۔ انہوں نے کہا کہ "مقصد امن ہے خواہ یہ دو ریاستی حل سے حاصل ہو یا کسی دوسرے حل کے راستے.. بنیادی بات یہ ہے کہ یہ فریقین کی چاہت سے ہو"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں