.

حزب اللہ کی طرف سے حملے کا خطرہ نہیں: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کے آرمی چیف جنرل گیڈی آئزنکوٹ نے ملک کے شمالی محاذ بالخصوص لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ساتھ کسی بھی قسم کی محاذ آرائی کو خارج از امکان قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ جنوبی محاذ پر غزہ کے علاقے میں حماس کے ساتھ بھی کسی ٹکراؤ کا کوئی امکان نہیں ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق صہیونی آرمی چیف نے کنیسٹ کی خارجہ وسیکیورٹی کمیٹی کےا اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگرچہ شام کی جنگ میں حزب اللہ کے جنگجوؤں نے کافی مہارت حاصل کی ہے مگر دوسری جانب شام میں مداخلت نے حزب اللہ کو مادی اور معنوی نقصان سے بھی دوچار کیا ہے۔

جنرل آئزنکوٹ نے کہا کہ شام کے وادی گولان کے حصے میں آئندہ چند ماہ کے دوران لڑائی چھڑنے کے امکانات موجود رہیں گے مگر حزب اللہ کے سیکرٹری جنرل حسن نصراللہ کی طرف سے دھمکیاں اسرائیل ’اسٹیٹیس کو‘ کو برقرار رکھنے کی کوشش ہے۔

اسرائیلی آرمی چیف نے انکشاف کیا کہ انہوں نے غزہ سے اسرائیل کی طرف حماس کی سرنگوں کی کھدائی روکنے کے لیے نصف ارب ڈالر کی رقم منظور کرائی۔ جنرل آئزنکوٹ نے کہا کہ اسرائیلی فوج کا آئندہ کا پروگرام بری مشقوں پر توجہ دینا ہے۔ جنگ میں کامیابی کے لیے زمین اہداف پر کاری ضرب کی ضرورت ہے اور اسرائیل کی سب سے زیادہ توجہ اسی معاملے پر رہے گی۔