.

عراقی فوج مرکزی موصل سے صرف ایک کلو میٹر دور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کی فیڈرل پولیس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مغربی موصل میں داعش کے خلاف جاری آپریشن میں عراقی سیکیورٹی فورسز شہر کے مرکز سے صرف ایک کلومیٹر کی دوری پر ہیں۔

دوسری جانب داعش نے شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پراستعمال کرنے کے لے مغربی موصل کی گلیوں کو بند کردیا ہے جس کے نتیجے میں فوج کی پیش قدمی متاثر ہوئی ہے۔ ذرائع کے مطابق داعش نے شہریوں کا فرار روکنے کے لیے تمام خارجی راستے سیل کردیے ہیں۔

قبل ازیں عراق کی جوائنٹ سیکیورٹی فورسز نے موصل کی دائیں ساحلی پٹی میں قابل ذکر پیش قدمی کا دعویٰ کیا تھا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ حکومتی فورسز نے مغربی موصل کے ساحلی علاقے حاوی الجوسق کو داعش سے آزاد کرالیا ہے۔

عراقی فوج کے ذریعے کا کہنا ہے کہ فورسز نے مغربی موصل کے کئی دیہات پر قبضہ کیا ہے۔ الغزلانی فوجی کیمپ اور ہوائی اڈے کو داعش سے چھڑا لیا گیا ہے۔

عراق فوج الغزلانی کیمپ پر کنٹرول کے بعد پیش قدمی کرتے ہوئے تل الرمان اور المامون کالونیوں میں بھی داخل ہوگئی ہے۔

عراقی وزارت داخلہ کی رپورٹ کے مطابق فورسز مغربی موصل میں پیش قدمی جاری رکھے ہوئے ہے۔ اس ضمن میں العطشانہ ٹیلوں کے ایک سلسلے پربھی قبضہ کرلیا گیا ہے۔