.

اسرائیل کے ساتھ سرحد پر درجنوں لبنانیوں کا مظاہرہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی میڈیا کے مطابق ہفتے کے روز درجنوں لبنانی شہریوں نے اسرائیل کے ساتھ سرحد پر مظاہرہ کیا۔ اس موقع پر مظاہرین نے اپنے قصبے میں جاسوسی کے واسطے سماعت کے خفیہ آلات کی تنصیب پر احتجاجا اسرائیلی سرحد کو عبور کرنے کی کوشش بھی کی۔ تاہم اسرائیلی فوج نے انہیں دور کر دیا۔

اسرائیلی فوج کی ترجمان نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ مظاہرین کو سرحد پار کرنے کی کوشش سے روکنے کی کارروائی میں کوئی زخمی نہیں ہوا۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق لبنانی مظاہرین سرحد کے نزدیک اپنے قصبے میں اسرائیلی فوج کی جانب سے جاسوسی کا ساز و سامان نصب کرنے پر سراپا احتجاج بنے ہوئے تھے۔

لبنان اور اسرائیل اب بھی حالت جنگ میں ہیں اور لبنان کے جنوب میں سرحد کی نگرانی کے لیے 10 ملکوں پر مشتمل اقوام متحدہ کی عارضی فوج کے 10 ہزار اہل کار تعینات ہیں۔

2006 میں اسرائیل اور شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے درمیان جنگ پر روک لگانے والی بین الاقوامی قرارداد میں کہا گیا تھا کہ لبنانی فوج جنوبی لبنان میں تعینات کی جائے گی جن میں وہ علاقے بھی شامل ہیں جن پر پہلے حزب اللہ کا کنٹرول تھا۔

اس قرار داد کے تحت لبنان کے جنوب میں موجود حزب اللہ کے جنگجو ہتھیاروں کی نمائش نہیں کر سکتے۔ اُس جنگ کو تقریبا ایک دہائی گزر جانے کے بعد بھی اسرائیل کو حزب اللہ کے ہتھیاروں کے ذخیرے پر سخت تشویش لاحق ہے۔

اسرائیل نے شام کے اندر حزب اللہ کے اہداف کو نشانہ بنایا ہے جہاں تنظیم کے ہزاروں جنگجو بشار الاسد کی حکومت کے دفاع میں لڑ رہے ہیں۔