.

یمن : نہم میں فوج کا باغی ملیشیاؤں پر بڑا حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں جمعرات کے روز سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے صنعاء کے مشرق میں نہم کے محاذ پر حوثی اور صالح ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر یک دم حملہ کر دیا۔ اس کے نتیجے میں کم از کم 26 باغی مارے گئے۔

صںعاء میں عوامی مزاحمت کاروں کے ترجمان عبداللہ الشندقی کے مطابق یمنی فوج نے پیش قدمی کرتے ہوئے متعدد پہاڑوں اور تزویراتی ٹھکانوں پر کنٹرول حاصل کر لیا۔ عسکری ذرائع نے بھی بتایا ہے کہ یمنی فوج نے تزویراتی اہمیت کے حامل علاقے نقیل بن غیلان کی جانب پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے جو نہم میں حوثیوں کا گڑھ ہے۔

الشندقی نے مزید بتایا کہ یمنی فوج نے نہم کے مشرق میں بہت سے دیگر مقامات کو بھی باغیوں سے واپس لے لیا ہے جن میں دوه ، وار العیانی کا پہاڑی علاقہ شامل ہے۔ عسکری ماہرین کے مطابق جبلِ عیانی کی جانب پیش قدمی کے نتیجے میں صنعاء کا احاطہ کرنے والے دو علاقوں ارحب وار بنی حشیش کے درمیان راستے کو منقطع کیا جا سکے گا۔

ادھر صنعاء کے گورنر عبدالقوی شریف کا کہنا ہے کہ سرکاری فوج ارحب ضلعے سے صرف تین کلو میٹر کی دوری پر رہ گئی ہے جو صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے سامنے ہے۔