.

حوثیوں نے 3 ہزار مساجد کو بیرکوں میں بدل ڈالا : یمنی وزیر اوقاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں وزیرِ اوقاف و اِرشاد ڈاکٹر احمد عطیہ کا کہنا ہے کہ " مارب صوبے کے علاقے صراوح میں حوثی ملیشیاؤں کی جانب سے مسجد کوفل کو نشانہ بنایا جانا حیرانی کی بات نہیں کیوں کہ ان ملیشیاؤں کو ایران سے ہدایات ملتی ہیں۔ وزارت اوقاف کے اعداد و شمار کے مطابق حوثیوں نے 3000 سے زیادہ مساجد کو عسکری بیرکوں اور گوداموں میں تبدیل کر دیا جب کہ متعدد مساجد کو دھماکوں سے تباہ بھی کیا"۔

روزنامہ "عکاظ" کے مطابق ڈاکٹر احمد عطیہ نے کہا کہ مساجد کو نشانہ بنایا جانا ایران کے اُس توسیعی منصوبے کی حقیقت کو بے نقاب کرتی ہے جس پر حوثی یمن میں عمل درامد کر رہے ہیں۔ انہوں نے باور کرایا کہ " جنگی جرم شمار کیے جانے والے حادثے میں جمعے کی نماز ادا کرنے والوں کو نشانہ بنانا.. یمنی عوام کے حوالے سے باغیوں کے وحشیانہ پن کا ثبوت ہے"۔

مارب صوبے کے گورنر نے ہفتے کے روز بتایا تھا کہ حوثیوں کی جانب سے راکٹوں اور گولہ باری کا نشانہ بننے کے سبب مسجد ایک "کھنڈر" میں تبدیل ہو گئی۔ اس وحشیانہ کارروائی میں 34 افراد جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوئے۔