.

شامی فوج کی مشرقی الغوطہ پر بمباری، 22 شہری جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انسانی حقوق کی تنظیموں کی فراہم کردہ اطلاعات کے مطابق شام میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کی طرف سے دمشق کے قریب مشرقی الغوطہ میں سوموار کے روز کی گئی وحشیانہ گولہ باری سے کم سےکم 22 شہری جاں بحق ہو گئے۔

شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پرنظر رکھنے والے ادارے’آبزویٹری فارہیومن رائٹس‘ کے مطابق سوموار کو اسدی فوج نے دارالحکومت دمشق کے قریب دیہاتوں پر وحشیانہ بمباری کی جس کے نتیجے میں دو درجن کے قریب شہری جاں بحق اور دسیوں زخمی ہوئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق مشرقی دوما میں بمباری کے دوران 16 افراد مارے گئے جب کہ 22 زخمی ہوئے ہیں۔

اس کے علاوہ حرستا میں اسدی فوج کی بمباری سے پانچ شہریوں کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

آبزرویٹری کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ سرکاری فوج کی طرف سے مشرقی الغوطہ کا سخت ترین محاصرہ جاری ہے۔

خیال رہے کہ مشرقی الغوطہ کا اسدی فوج کی جانب سے محاصرہ 2012ء سے جاری ہے۔ اسدی فوج آئے روز شہری آبادی پر بم برسا رہی ہے۔