.

حماس کی نئی قیادت کا جلد اعلان متوقع ،اسماعیل ہنیہ نئے سربراہ ہوں گے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی جماعت حماس کی نئی قیادت کا آیندہ چند روز میں اعلان متوقع ہے جبکہ وہ اپنے نئے ضمنی منشور کو بھی منظرعام پر لا رہی ہے۔

غزہ کی پٹی میں حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے کہا ہے کہ جماعت کے داخلی انتخابات کے نتائج کا اعلان آیندہ چند روز میں کردیا جائے گا جبکہ حماس کے ایک اعلیٰ عہدہ دار نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا ہے کہ نئی قیادت کا 15 مئی سے قبل اعلان متوقع ہے۔

اس عہدہ دار کے بہ قول اسماعیل ہنیہ کو اسلامی تحریک مزاحمت کا نیا سربراہ نامزد کیا جاسکتا ہے۔ وہ دوحہ میں جلاوطنی کی زندگی گزارنے والے حماس کے رہ نما خالد مشعل کی جگہ لیں گے۔وہ جماعت کے دو مرتبہ سربراہ رہ چکے ہیں اور تیسری مرتبہ انھیں آئین کے تحت منتخب نہیں کیا جاسکتا ہے۔

حماس قطر میں سوموار کے روز ایک ضمنی منشور کا بھی اعلان کررہی ہے۔اس میں 1967ء کی چھے روزہ جنگ میں اسرائیل کے زیر قبضہ آنے والے فلسطینی علاقوں پر مشتمل ریاست کے قیام کی تجویز کو باضابطہ طور پر تسلیم کرلیا جائے گا۔بعض تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اس اقدام کا مقصد حماس کی بین الاقوامی تنہائی کو کم کرنا ہے۔

تنظیم کا 1988ء میں اعلان کردہ اصل منشور جوں کا توں رہے گا اور مغربی ممالک کے مطالبے پر اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا جائے گا۔واضح رہے کہ امریکا اور اس کے مغربی اتحادی حماس سے اسرائیلی ریاست کو تسلیم کرنے کا مطالبہ کرتے چلے آرہے ہیں جبکہ یہ مزاحمتی جماعت اسرائیل کے فلسطینی علاقوں پر قیام کو سرے سے قبول ہی نہیں کرتی ہے۔