.

"سیف زونز" کا معاہدہ جنیوا بات چیت کا متبادل ہے: شامی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی حکومت کے وزیر خارجہ ولید المعلم نے پیر کے روز کہا ہے کہ اگر اپوزیشن نے "سیف زونز" کے معاہدے کی خلاف ورزی کی تو شامی حکومت اس کا بھرپور جواب دے گی۔ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جنیوا بات چیت میں کوئی پیش رفت نہیں ہو رہی ہے۔

ولید المعلم نے باور کرایا کہ شامی حکومت آستانہ میں طے پائے جانے والے سیف زونز کے منصوبے کی پاسداری کرے گی بشرط یہ کہ اپوزیشن بھی اس کی پابندی کرے۔ انہوں نے اس امید کا اظہار بھی کیا کہ سیف زونز کا معاہدہ اپوزیشن کو "دہشت گردوں" سے الگ کر دے گا۔

المعلم کے مطابق اِدلب میں جبہۃ النصرہ کے جنگجو موجود ہیں۔ انہوں نے باور کرایا کہ اپوزیشن پر لازم ہے کہ وہ اپنے علاقوں سے جبہۃ النصرہ کو باہر نکالے تا کہ وہاں سیف زونز کے معاہدے کا اطلاق ہو سکے۔

شامی وزیر خاجہ کا کہنا تھا کہ سیف زونز میں اقوام متحدہ کا کوئی کردار نہیں ہے.. روس وہاں نگراں کا کردار ادا کرے گا اور "فوجی پولیس" تعینات کرے گا۔

ولید المعلم نے اردن کو دھمکی دیتے ہوئے خبردار کیا کہ "اگر اس کی افواج ہماری سرزمین میں داخل ہوئیں تو انہیں دشمن افواج شمار کیا جائے گا"۔