.

شام میں سیف زونز کی توسیع کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں : لاؤروف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاؤروف کا کہنا ہے کہ وہ شام میں چار سیف زونز کا دائرہ وسیع کرنے کی کوشش کر رہے ہیں تا کہ بقیہ شامی اراضی کو بھی فائر بندی میں شامل کیا جا سکے۔

اتوار کے روز روس کے چینل 1 کو دیے گئے انٹرویو میں لاؤروف نے بتایا کہ حالیہ "آستانہ 4" اجلاس کے دوران روس ، ترکی ، ایران ، بشار حکومت اور مسلح اپوزیشن کے درمیان ایک یادداشت پر اتفاق رائے ہوا۔ اس یادداشت کے تحت امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے سابقہ طور تجویز کردہ سکیورٹی علاقوں کے منصوبے کو آگے بڑھایا جائے گا تا کہ یہ تجربہ تمام شامی اراضی تک پھیل جائے۔ واضح رہے کہ ٹرمپ کا تجویز کردہ منصوبہ شام میں 4 سیف زونز کا معاہدہ طے پانے کی بنیاد بنا۔

روسی وزیر خارجہ کا یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب شامی حکومت کی افواج اپوزیشن کے مسلح گروپوں کے زیر کنٹرول علاقوں سے شہریوں اور جنگجوؤں کی منظم بے دخلی کی کارروائیوں میں مصروف ہے۔ بالخصوص دمشق کا علاقہ القابون جہاں سے اتوار کے روز تقریبا 2000 شہریوں اور جنگجوؤں نے نقل مکانی کی۔

مقررہ پروگرام کے مطابق جنیوا مذاکرات 6 کا انعقاد منگل کے روز ہونا ہے۔ اس سلسلے میں شامی حکومت کی شرکت ابھی تک ابہام کا شکار ہے جس کا سربراہ بشار الاسد پہلے ہی یہ بیان دے چکا ہے کہ اِن مذاکرات سے کچھ حاصل ہونے کی توقع نہیں ہے۔ شامی وزیر خارجہ ولید المعلم نے بھی آستانہ بات چیت کو جنیوا مذاکرات کا متبادل قرار دیا تھا۔