.

ڈرامہ سیریل کے ذریعے "MBC" گروپ کی داعش کے خلاف جنگ: نیویارک ٹائمز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایسا نظر آ رہا ہے کہ "داعش" تنظیم کے خلاف بین الاقوامی جنگ رواں برس عرب دنیا میں رمضان کے دوران پیش کیے جانے والے خصوصی ڈراموں کے ذریعے ٹی وی اسکرینوں تک منتقل ہو جائے گی۔ اس سلسلے میں MBC 1 پر 30 قسطوں پر مشتمل ڈرامہ سیریل کا نام خصوصی طور پر لیا جا رہا ہے۔

امریکی اخبار "نیویارک ٹائمز" نے MBC گروپ کے ٹی وی ڈائریکٹر علی جابر کے حوالے سے بتایا ہے کہ نئی ڈرامہ سیریل کا نام "غرابيب سود" ہے جس کو رمضان کے آغاز کے ساتھ ہی نشر کیا جائے گا۔

ڈرامے کی کہانی دہشت گرد تنظیم داعش کے گرد گھومتی ہے۔ اس میں جنگجوؤں کی بھرتی کے علاوہ اُن دلیر خواتین کے کردار پر بھی روشنی ڈالی گئی ہے جو مجرمانہ تنظیم کے دہشت گردوں کو چینلج کرتی ہیں۔

ایک قسط میں دکھایا گیا ہے کہ "داعش" کے جنگجو بچوں کو بھرتی کر کے تربیت دے رہے ہیں تا کہ انہیں اپنی صفوں میں شامل کیا جا سکے۔

ڈرامے کی ایک اور قسط میں ایک صحافی کو دکھایا گیا ہے جس کی منگیتر اپنا مسیحی عقیدہ چھوڑ کر شدت پسند تنظیم میں شمولیت اختیار کر لیتی ہے اور پھر ایک کلیسا کو دھماکے سے اڑانے کی کارروائی کرتی ہے۔

ڈرامہ سیریل میں عرب دنیا کے مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے فن کاروں کی ایک بڑی تعداد شریک ہے۔

امریکی اخبار نے خاتون اداکارہ سمر علام کے حوالے سے بتایا ہے کہ ڈرامے کے کردار کے باعث وہ ڈپریشن کا شکار ہو گئیں تاہم انہیں امید ہے کہ ڈرامے کا پیغام اور سوچ ناظرین تک اچھے طریقے سے پہنچے گی۔

سعودی اداکارہ مروہ محمد نے ایک ایسی بیوی کا کردار ادا کیا ہے جو اپنے بے وفائی کے مرتکب شوہر کو قتل کر دیتی ہے اور پھر اپنے بچوں کے ساتھ فرار ہو کر داعش میں شامل ہو جاتی ہے۔ سعودی اداکارہ کے مطابق اہم بات یہ ہے کہ لوگوں کو بیدار کیا جائے اور ان کو بتایا جائے کہ اسلام اس طرح نہیں ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ یہ ڈرامہ سیریل محض دہشت گردی اور جنگ نہیں ہے بلکہ یہ انسانی جذبات سے بھی بھرپور ہے۔

ڈرامے میں اُن شخصیات کے کرداروں پر بھی روشنی ڈالی گئی ہے جو اس دہشت گرد تنظیم کے پرچم تلے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔

ایم بی سی گروپ کے ٹی وی ڈائریکٹر علی جابر کا کہنا ہے کہ " ہم سمجھتے ہیں کہ داعش محض ایک وبائی بیماری ہے.. ایسی بیماری جس سے ہمیں پوری دلیری کے ساتھ لڑنا چاہیے"۔

نیویارک ٹائمز کے نزدیک دنیا بھر میں "داعش" تنظیم کے بارے میں ٹی وی پروڈکشن بہت زیادہ خطرے کی حامل ہوتی ہے۔ ان پروڈکشن میں کام کرنے والے اداکاروں کو قتل کی دھمکیاں بھی موصول ہوتی ہیں۔

یاد رہے کہ بہت سی ڈرامائی تمثیلوں میں داعش تنظیم کی کارستانیوں پر روشنی ڈالی گئی ہے تاہم امریکا کے ڈیوڈسَن کالج میں عربک اسٹڈیز کی اسسٹنٹ پروفیسر ریبیکا جوبن کے مطابق MBC گروپ کی ڈرامہ سیریل "غرابيب سود" کو دہشت گردی کی دنیا میں گہرائی کے ساتھ غوطہ لگانے والی پہلی ڈرامہ پروڈکشن شمار کیا جا رہا ہے۔

ڈرامہ سیریل "غرابيب سود" تیار کرنے والوں کو پورا یقین ہے کہ اسے ناظرین کی بھرپور پذیرائی حاصل ہو گی بالخصوص جب کہ MBC 1 عرب دنیا میں سب سے زیادہ دیکھے جانے والے چینلوں میں سے ایک ہے۔

ایم بی سی نیٹ ورک کو امید ہے کہ ڈرامہ سیریل "غرابیب سود" کا ایک انگریزی ورژن بھی تیار کیا جائے گا تا کہ اس کا پیغام وسیع تر پیمانے پر پھیل سکے۔