.

ریاض : خلیجی امریکی سربراہ اجلاس کا اختتام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ریاض میں خلیجی امریکی سربراہ اجلاس کی کارروائی اختتام پذیر ہو گئی۔ اجلاس کی صدارت سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کی۔ اس موقع پر خلیج تعاون کونسل کے ممالک کی قیادت اور امریکی صدر کے درمیان ملاقات میں خطے میں امن و استحکام کو درپیش خطرات اور امریکا کے خلیج تعاون کونسل کے ممالک کے ساتھ تجارتی تعلقات کے علاوہ خلیجی دفاعی نظام کی تکمیل اور کئی شعبوں میں مشترکہ تعاون کا طریقہ کار بھی زیر بحث آیا۔

سربراہ اجلاس سے قبل دہشت گردی کو مالی رقوم فراہم کرنے والے ذرائع کی نگرانی سے متعلق واشنگٹن کے ساتھ ایک مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔ امریکی وزارت خزانہ اور خلیجی ممالک کے درمیان تعاون کی اس یادداشت کا مقصد دہشت گردی کے مالی ذرائع کے سُوتے خشک کرنا ہے۔

اس سے قبل صدر ٹرمپ شاہ عبدالعزیز کانفرنس مرکز پہنچے تو ان کا استقبال سعودی فرماں روا نے کیا۔ خلیجی ممالک کی قیادت پہلے ہی کانفرنس مرکز پہنچ چکی تھی۔

ریاض میں خلیجی امریکی سربراہ اجلاس کا انعقاد 2015 اور 2016 میں کیمپ ڈیوڈ اور ریاض میں ہونے والے دو سربراہ اجلاسوں کے بعد عمل میں آیا ہے۔ گزشتہ دونوں اجلاسوں میں سابق امریکی صدر باراک اوباما نے شرکت کی تھی۔

گزشتہ خلیجی امریکی سربراہ اجلاسوں میں خطے کو غیر مستحکم کرنے کے لیے ایران کی کارروائیوں ، دیگر ممالک میں اس کی مداخلتوں اور خلیجی ممالک کی مسلح افواج کی لڑائی کی اہلیت کو بڑھانے کے لیے مشترکہ مشقوں جیسے امور پر روشنی ڈالی گئی تھی۔