.

مصر میں تمام قطری ویب سائیٹس، آن لائن اخبارات بند

دہشت گردی اور اخوان کی حمایت پر مبنی مواد پوسٹ کرنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری حکومت نے خلیجی ریاست قطر کے ساتھ کشیدگی کے بعد قطر کے تمام آن لائن اخبارات اور ویب سائٹس تک رسائی معطل کردی ہے۔ مصر میں بندش کا شکار ہونے والے آن لائن ویب قطری پورٹلز میں مشہور ٹی وی چینل الجزیرہ کی سائٹ سمیت 21 آن لائن ویب گاہیں شامل ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ذرائع کے مطابق مصری حکومت کی طرف سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ قطری ذرائع ابلاغ اور اخوان المسلمون کے حامی اخبارات پر مصرکے خلاف جھوٹا اور منفی پروپیگنڈا کرنے کے ساتھ ساتھ دہشت گردی کی حمایت پر مبنی مواد بھی موجود تھا جس پر ان ویب گاہوں تک رسائی روک دی گئی ہے۔

مصری حکومت کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ حکومت نے قطری اخبارات کے آن لائن ایڈیشنز اور الجزیرہ ٹی وی کی ویب سائٹس، ترکی سے نشریات پیش کرنے والے اخوان المسلمون کے ٹی وی چینلوں کی ویب سائیٹس کو بلاک کردیا گیا ہے۔

میں بلاک کیے گئے قطر کے آن لائن اخبارات کی فہرست میں الشرق، العرب، الرایہ، الوطن القطریہ، قطر نیوز ایجنسی، الجزیرہ ٹیلی ویژن کی ویب سائٹ،العربی 21، اخبار الشعب،، الحریہ پوسٹ، ھسم، بوابہ القاہرہ، المصریون، ھیونگٹن پوسٹ، حماس آن لائن، اخوان آن لائن، رصد العربی الجدید اور مدیٰ مصرویب سائٹس شامل ہیں۔

مصری حکومت کا کہنا ہے کہ وہ اخوان المسلمون اور دہشت گردی کی حمایت کرنے والے تمام آن لائن اخبارات کو بتدریج بند کردے گی۔ اگلے مرحلے میں اخوان المسلمون کے پروپیگنڈا ٹی وی چینلوں مکملین اور الشرق کی ویب سائٹس کو بھی بلاک کیا جا رہا ہے۔

خیال رہے کہ دو روز قبل امیر قطر شیخ تمیم بن احمد آل ثانی نے اخوان المسلمون، فلسطینی تنظیم حماس اور لبنانی حزب اللہ کے بارے میں خلیجی ممالک کی پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ایران کی حمایت کا اظہار کیا تھا۔اس کے بعد قطر کی سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے درمیان نئی کشیدگی پیدا ہوگئی ہے۔

امیر قطر کے بیان کے بعد سعودی عرب نے قطر کے متعدد ذرائع ابلاغ تک آن لائن رسائی روک دی تھی۔ اس کے بعد متحدہ عرب امارات نے بھی قطری اخبارات اور آن لائن ذرائع ابلاغ بند کردیے ہیں۔