قطرسے سمجھوتہ مغربی ضمانت کے بغیر بے سود ہو گا: امارات

’خلیجی ممالک کو دوحہ پر اعتبار نہیں رہا‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

متحدہ عرب امارات نے کہا ہے کہ قطر کی جانب سے دہشت گردی کی فنڈنگ روکنے کا کوئی بھی سمجھوتہ مغربی ممالک کی نگرانی اور ضمانت ہی میں قابل عمل ہو سکتا ہے۔ متحدہ عرب امارات، سعودی عرب، مصر اور بحرین کو قطر پر اعتبار نہیں رہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور انور قرگاش نے قطر سے بات چیت صرف اسی شرط پر ہو سکتی ہے کہ دوحہ دہشت گرد تنظیموں کی مالی معاونت بند کرے۔

انہوں نے کہا کہ سازشوں کی بنیاد پر موقف کا دفاع ممکن نہیں۔ قطر کی جانب سے ماضی میں کیے گئے وعدے ایفا کیے گئے اور نہ ہی خلوص نیت سے دہشت گردی کی معاونت کے لیے کردار ادا کیا گیا۔ جب آپ سچائی اور شفافیت کے ساتھ اقدامات کریں معاملات کو آسانی سے سلجھایا جا سکتا ہے۔ ان کا اشارہ قطری پالیسیوں کی جانب تھا۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر پوسٹ بیانات میں اماراتی وزیر مملکت نے انتہا پسندی کے خلاف موثر ابلاغی مہم چلانے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ ان کے بیانات ایک ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب بحرین نے امیر قطر کے مشیر حمد خلیفہ بن عبداللہ العطیہ اور بحرین کے باغی لیڈر حسن علی محمد جمعہ سلطان کے درمیان ٹیلیفون کالز کے سازشی اسکینڈل کا انکشاف کیا ہے۔ ٹیلیفون پر ہونے والی گفتگو میں قطری مشیر اور بحرینی اپوزیشن لیڈر کو منامہ کے خلاف سازشوں کی منصوبہ بندی کرتے سنا جا سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں