.

مصر : عید الفطر پر دہشت گردی کی سازش ناکام ، 6 مشتبہ دہشت گرد گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں حکام نے عید الفطر کے موقع پر ایک گرجا گھر پر دہشت گردی کے حملے کی سازش کرنے والے گروہ کو پکڑ لیا ہے اور اس کی سازش ناکام بنا دی ہے۔

گرفتار افرا د نے اپنی سازش کا اعتراف کر لیا ہے اور انھوں نے حکام کو بتایا ہے کہ ان کے ایک حملہ آوربمبار نے گرجا گھر کے اندر خود کو دھماکے سے اڑانا تھا اور دوسرے نے امدادی سرگرمیوں کے لیے آنے والے افراد کے درمیان دھماکا کرنا تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے دہشت گردوں کے اعترافی بیانات پر مبنی ایک ویڈیو پوسٹ کی ہے۔ان دہشت گردوں نے کہا ہے کہ ان کی اس کارروائی کا مقصد قبطیوں کو مصری حکومت کے خلاف اکسانا ،معاشرے کے قومی ڈھانچے کو تہس نہس کرنا اور خوف وہراس اور افراتفری پھیلانا تھا۔

انھوں نے مزید کہا ہے کہ ان کا ایک اور مقصد 30 جون کے انقلاب کی چوتھی سال گرہ کے موقع پر لوگوں کی خوشیوں کو لوٹنا تھا۔

دریں اثناء مصر کی وزارت داخلہ کے ایک عہدہ دار نے بتایا ہے کہ یہ دہشت گرد ان متشدد کارروائیوں میں ملوث تھے ، جن میں اہم تنصیبات کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ یہ افراد صحرائی اور دور دراز علاقوں میں رہ رہے تھے۔

دہشت گردی کے اس سیل کا ملک کے دوسرے بڑے شہر اسکندریہ کے علاقے الآ ویز میں ایک اپارٹمنٹ سے سراغ لگا تھا ۔یہ وہاں دہشت گردی کے حملوں کی ساز ش کرر ہے تھے۔مصری فورسز نے اس اپارٹمنٹ میں چھاپا مار کارروائی کرکے دو خوش بمباروں سمیت چھے مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

اس نے دونوں ممکنہ خودکش بمباروں کی شناخت احمد محمد زید حسن محروس اور حمزہ شعبان عبد الرحمان جد کے نام سے کی ہے۔ دوسرے گرفتار کیے گئے افراد کے نام یہ ہیں: علی حمدان علی حنفی ،عمر محمد ابو الاعلیٰ علی احمد،محمود احمد رجب خلیل عمرو اور عزت عبد الحلیم عبدالغفار السید قندیل ۔ان کے قبضے سے دو خودکش جیکٹس اور چھے ڈیٹونیٹر بھی برآمد ہوئے ہیں۔