.

ہیضے کی وبا نے 2 لاکھ سے زیادہ یمنیوں کو لپیٹ میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی ادراہ صحت نے ہفتے کے روز اعلان کیا ہے کہ یمن کے 20 صوبوں میں ہیضے کی وبا میں مبتلا افراد کی تعداد دو لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔

تنظیم نے ایک ٹوئیٹ میں بتایا کہ "اس مرض سے وفات پانے والے افراد کی مجموعی تعداد 1310 ہو گئی ہے"۔

تنظیم نے جمعے کی شام اعلان کیا تھا کہ مجموعی اموات کی تعداد 1256 ہو چکی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ صرف ایک روز میں 54 افراد کی اضافی وفات ریکارڈ کی گئیں۔

یمن میں ہیضے کی وبا سے متاثرہ صوبوں میں ملک کا شمال مغربی صوبہ حجہ سرِ فہرست ہے۔ اس کے بعد بالترتیب اِب ، الحدیدہ اور صنعاء کے صوبے ہیں جو تمام ہی باغی ملیشیاؤں کے زیرِ کنٹرول ہیں۔ اس کے علاوہ جنوب مغربی صوبہ تعز ہے جہاں یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کے ساتھ حوثی اور معزول صالح کی ملیشیاؤں کی مسلح جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔ باغیوں نے دو سال سے زیادہ عرصے سے تعز صوبے کا شدید محاصرہ کر رکھا ہے۔ باغی ملیشیاؤں کی جانب سے تعز شہر کے رہائشی علاقوں اور صوبے کے دیہاتوں کو اندھادھند گولہ باری کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔