.

اسرائیل کے خلاف پاسدارانِ انقلاب سے مدد لیں گے: رکنِ پارلیمنٹ حزب اللہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حزب اللہ سے تعلق رکھنے والے رہ نما اور لبنانی رکن پارلیمنٹ نواف الموسوی نے دھمکی دی ہے کہ اسرائیل کے ساتھ کوئی نئی جنگ چِھڑی تو تنظیم ایرانی پاسداران انقلاب سے مدد لے گی۔

حزب اللہ کے اس نوعیت کے بیانوں کو لبنان میں کئی سیاسی حلقوں کی جانب سے مسترد کیا جاتا رہا ہے۔ یہ حلقے حزب اللہ پر الزام عائد کرتے ہیں کہ اس نے لبنان کو شرم ناک فرقہ وارانہ چھاپ کی حامل پالیسی میں جھونکنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

اس سے قبل حزب اللہ کے سکریٹری جنرل کی جانب سے عندیہ دیا گیا تھا کہ اسرائیل کے ساتھ کسی بھی نئی جنگ کی صورت میں لاکھوں جنگجوؤں کو لبنان لایا جائے گا۔ حسن نصر اللہ کے اس بیان کو لبنانی ریاست کے لیے خطرہ شمار کیا جا رہا ہے۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ لبنان اس طرح خطے میں جنگوں کا میدان بن جائے گا جس کا مقصد ایرانی منصوبے کے کام آنا ہے۔

نواف الموسوی نے بھی حسن نصر اللہ کی بات کو دُہراتے ہوئے باور کرایا ہے کہ اسرائیل کے ساتھ جنگ کی صورت میں ایرانی پاسداران انقلاب اور عراقی پاپولر موبیلائزیشن کو لایا جائے گا۔

دوسری جانب لبنان کی سیاسی جماعت Lebanese Forces Party کے سربراہ سمیر جعجع نے کہا ہے کہ حزب اللہ کے ذمے دار کا حالیہ بیان پُر آفت جارحیت کے مترادف ہے جو نہ صرف لبنان کی خود مختاری کے لیے خطرہ ہے بلکہ اس کے ذریعے مسلکی فرقہ واریت میں لتھڑی ہوئی بیرونی قابض فورسز کو بھی مداخلت کی دعوت دی جا رہی ہے جس سے لبنان کا معاشرتی ڈھانچہ تباہ ہو جائے گا۔