نیتن یاھو کے دورہ وادی گولان کے دوران شام سے راکٹ حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

کل بدھ کو اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو اور ان کی کابینہ میں شامل وزراء کے مقبوضہ وادی گولان کے دورے کے دوران شام کے اندر سے راکٹ حملہ کیا گیا۔ اسرائیلی فوج نے راکٹ حملے کے جواب میں شام کے القنیطرہ علاقے میں اسدی فوج کے ٹھکانوں پر جنگی طیاروں سے بمباری کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شام کے اندر سے راکٹ غلطی سے اسرائیل کے زیرانتظام علاقے میں داغا گیا تھا، تاہم اسرائیلی فوج نے اس واقعے کا فوری جواب دیتے ہوئے شام کے اندر بمباری کی۔

وادی گولان میں کاتسرین کے مقام پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے نیتن یاھو نے کہا کہ تل ابیب سرحد پار سے راکٹ حملوں کو قبول نہیں کرے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل اچھی طرح جانتا ہے کہ سرحد پار کیا ہو رہا ہے مگر ہم سرحد پار مداخلت سے گریز کی پالیسی پر قائم رہتے ہوئے صہیونی ریاست کی سلامتی کو خطرہ پہنچانے کے کسی بھی حملے کا منہ توڑ جواب دیں گے۔

ادھر اسرائیلی وزیراعظم کے دفتر سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ نیتن یاھو وادی گولان میں کاتسرین کےمقام پر تھے جب شام کے اندر سے گولے داغے گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں