ایرانی عہدیدار کی ’داعشی‘ خلیفہ البغدادی کی ہلاکت کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کے ایک مقرب عہدیدار نے دعویٰ کیا ہے کہ دہشت گرد تنظیم ’داعش‘ کے سربراہ ابو بکر البغدادی ہلاک ہوچکے ہیں۔

ایران کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق بیرون ملک سرگرم ایرانی ملیشیا کے ایک سینیر عہدیدار اور سپریم لیڈر کے مقرب علی شیرازی نے بتایا کہ بالیقین دہشت گرد البغدادی ہلاک ہوچکا ہے تاہم انہوں نے البغدادی کی ہلاکت کے حوالے سے اپنے دعوے کی مزید تفصیل بیان نہیں کی۔

خیال رہے کہ حالیہ ایام میں البغدادی کی ہلاکت کی متضاد اطلاعات آتی رہی ہیں۔ روسی حکام نے بھی البغدادی کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے تاہم داعش کے خلاف امریکا کی قیادت میں قائم عالمی اتحاد کا کہنا ہے کہ اس کے پاس البغدادی کے زندہ یا مردہ ہونے کا کوئی ٹھوس ثبوت نہیں۔

امریکی وزارت دفاع’پینٹاگون‘ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ’ہم یقین سے نہیں کہہ سکتے کہ آیا البغدادی مارا گیا ہے یا زندہ ہے۔ تاہم اگر وہ زندہ بھی ہے تب بھی وہ موجودہ جنگ میں زیادہ موثر نہیں رہا ہے۔ البغدادی اس وقت موصل یاالرقہ میں ہوسکتا ہے۔

روسی خبر رساں ادارے انٹر فیکس نے روسی حکام کے حوالے سے بتایا تھا کہ البغدادی کی موت 100 فی صد یقینی ہے۔ روسی حکام کا کہنا ہے کہ البغدادی کئی ماہ سے منظرعام سے غائب ہے، جو اس بات کا ثبوت کے اسے ہلاک کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں