بحرین میں ’کلہاڑا‘ گروپ سے وابستہ دہشت گرد گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خلیجی ریاست بحرین کے سیکیورٹی حکام نے ملک میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث الاشتر بریگیڈ کے ایک ذیلی سیل[کلہاڑا گروپ] کے عناصر کو حراست میں لیا گیا ہے۔

بحرین کے ڈائریکٹر سیکیورٹی جنرل میجر جنر طارق بن حسن الحسن نے جمعرات کو منامہ میں ایک بیان میں بتایا کہ ’کلہاڑا گروپ‘ نامی سیل دہشت گرد قرار دیے گئے الاشتر بریگیڈ سے وابستہ ہے۔

انہوں نےبتایا کہ کلہاڑا گروپ سے وابستہ عناصر الدیر کے علاقے میں ایک ویران عمارت میں چھپے ہوئے تھے، جہاں انہوں نے دھماکہ خیز مواد ، بم تیار کرنے اور انتہائی خطرناک بارود ذخیرہ کررکھا تھا۔ پولیس نے کارروائی کرکے بھاری مقدار میں بارود قبضے میں لے لیا ہے۔ حکام اس گروپ سے تفتیش کے دوران یہ جاننے کہ کوشش کررہے ہیں کہ آیا اس سیل کا کسی اور دہشت گرد گروپ کے ساتھ بھی کوئی تعلق ہے یا نہیں۔

بحرینی سیکیورٹی عہدیدار کا کہنا ہے کہ گرفتار کیے گئے کلہاڑا گروپ سے وابستہ دہشت گردوں نے کئی خطرناک کارروائیوں کی منصوبہ بندی کی تھی۔

رواں سال چار فروی کو ابو صبیح کے مقام پر ٹرک اور سول کار کو دماکے سے تباہ کرنے کی کوشش کی تھی جس کے نتیجے میں ٹرک کو نقصان پہنچا تھا۔

اسی ماہ السنابس کے مقام پر ایک بم حملے میں کار ڈرائیور زخمی ہوگیا۔ سات اپریل 2017 کو سماھیج کے مقام پر ایک فوجی قافلے کو دستی بم سےنشانہ بنایا گیا جس میں متعدد سیکیورٹی اہلکار زخمی ہوگئے تھے۔

کلہاڑا گروپ سے وابستہ گرفتارکیے گئے دہشت گردوں میں 20 سالہ سید احمد مہدی کاظم، عیسیٰ حسن عیسیٰ علی، 19 سالہ علی داؤد احمد داؤد العرادی،21 سالہ حسن شاکر حسن علی القوۃ،20 سالہ میثم علی حسن علی حسن اور دیگر شامل ہیں۔ ان دہشت گردوں میں سے بعض نے شام اور عراق میں دہشت گردی کی تربیت حاصل کر رکھی ہے اور وہ بحرین میں دہشت گردی کی متعدد کارروائیوں میں ملوث ہیں۔

سیکیورٹی فورسز نے دہشت گردوں کے ٹھکانے سے انتہائی تباہ کن دھماکہ خیز مواد C4، یورینیم نائٹریٹ، امونیم نائٹریٹ، خام کیمیائی مواد اور 52 کلو گرام TNT نامی دھماکہ خیز مواد بھی قبضے میں لیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں