لبنان : پناہ گزینوں کے کیمپوں میں 5 بم باروں نے خود کو اڑا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان میں فوج کی جانب سے عرسال قصبے کے مشرق میں واقع "النور" پناہ گزین کیمپ میں چھاپہ مار کارروائی کی گئی۔ فوج کے سرکاری بیان کے مطابق جمعے کو علی الصبح شامی باشندوں کے اس کیمپ میں تلاشی کے دوران ایک بارودی بیلٹ باندھے ہوئے خودکش بم بار اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا دیا۔ اس کے نتیجے میں خودکش بم بار ہلاک اور تین لبنانی فوجی اہل کار شدید زخمی ہو گئے۔

بعد ازاں کیمپ میں تین دیگر خودکش بم باروں نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا تاہم اس کے نتیجے میں لبنانی فوج کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ دہشت گردوں نے اس دوران بارودی مواد سے بھرے آلے کے ذریعے ایک دھماکا بھی کیا جب کہ سکیورٹی فورسز کے ماہرین نے چار دھماکا خیز آلات ناکارہ بنا دیے۔

بیان کے مطابق اسی علاقے میں شامی باشندوں کے ایک دوسرے پناہ گزین کیمپ "القاریہ" میں ایک دہشت گرد نے بارودی بیلٹ کے ذریعے خود کو دھماکے سے اڑا دیا تاہم اس سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ بعد ازاں ایک دوسرے دہشت گرد نے فوج کی ایک گشتی ٹیم کی طرف دستی بم پھینکا جس کے نتیجے میں چار فوجی اہل کار معمولی زخمی ہو گئے۔

فوج کے ہیلی کاپٹر کے ذریعے زخمی اہل کاروں کو منتقل کیا گیا۔

ادھر سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ لبنانی فوج نے عرسال کے تمام کیمپوں میں ایک بڑا عسکری آپریشن کیا ہے۔ اس دوران تقریبا 150 شامیوں کو حراست میں لے لیا گیا جن میں عسکری تنظیم جبہۃ فتح الشام سے تعلق رکھنے والے متعدد مسلح افراد بھی شامل ہیں۔

عرسال کے کیمپوں میں چھاپوں کی کارروائی جمعرات کے روز سکیورٹی حکام کو مطلوب ایک خطرناک شامی دہشت گرد احمد خالد دیاب کی گرفتاری کے بعد عمل میں آئی۔ دیاب نے عرسال کے قصبے میں لبنانی فوج کے ایک میجر نور الدين الجمل کو کر دیا تھا۔

1
مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں