.

ہیضہ سے یمن میں 1500 اموات،لاکھوں بدستور بیمار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یمن میں ہیضہ کی وباء کے نتیجے میں ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے۔ ملک کی 21 گورنریوں میں گذشتہ چند ہفتوں کے دوران کم سے کم 1500 شہری ہیضہ کی بھینٹ چڑھ چکے ہیں جب کہ لاکھوں بدستور اس موذی مرض کا شکار ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے زیرانتظام عالمی ادارہ صحت کے یمن میں مندوب نیفیوا زاگاریا اور ادارہ برائے اطفال کے قائم مقام مندوب شیر فارقی نے صنعاء میں ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں بتایا کہ گذشتہ کئی ہفتوں سے جاری ہیضے کی وباء سے لاکھوں شہری متاثر ہوئے ہیں۔ ہیضہ سے کم سے کم ڈیڑھ ہزار شامی شہری لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

اقوام متحدہ کے عہدیداروں نے بتایا کہ27 اپریل سے 30 جون 2017ء تک یمن میں ہیضہ سے ہونے والی اموات کی تعداد 1500 رجسٹرڈ کی گئی ہے جب کہ دو لاکھ 46 ہزار افراد بدستور اس موذی مرض کا شکارہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ یمن میں ہیضے کی وباء کا دائرہ بھی روز بہ روز پھیل رہا ہے۔ اس وقت 21 گورنریروں کے 285 ڈاریکٹوریٹ ہیضے کی لپیٹ میں ہیں۔ مشرقی گورنری حضرموت میں بھی دو افراد میں ہیضہ کی تشخیص کی گئی ہے۔