’قطرکودہشت گردی کی حمایت پر مبنی پالیسی ترک کرنا ہوگی‘

برطانوی وزیراعظم کا ولی عہد کو فون، قطری بحران پر بات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

برطانوی وزیراعظم تھریسا مے نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قطر کو اپنے پڑوسی ملکوں کے ساتھ مل کر کام کرنا ہوگا۔ دوحہ کی جانب سے دہشت گردی کی حمایت پر مبنی پالیسی کو کسی صورت میں قبول نہیں کیا جا سکتا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق برطانوی وزیراعظم نے ان خیالات کا اظہار سعودی عرب کے نو منتخب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز سے ٹیلیفون پر بات چیت میں کیا۔

تھریسا مے کاکہنا تھا کہ قطر کو دہشت گردی کے خلاف جنگ کے حوالے سے اپنا موقف واضح کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی سب کے لیے مشترکہ خطرہ ہے اور اس سے نمٹںے کے لیے مل کر کوششیں کرنا ہوں گی۔

انہوں نے دہشت گردی کی روک تھام کے حوالے سے پیش کردہ مطالبات پر قطر کو مزید 48 گھنٹے کی مہلت دیے جانے کا خیر مقدم کیا۔

دونوں رہ نماؤں کے درمیان ہونے والی ٹیلیفونک بات چیت میں دوطرفہ تعلقات کے فروغ ، قطری بحران اور خطے کے دیگر سلگتے مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں