یمن : حوثیوں کی کارستانیاں ، 21 صحافی ہلاک اور 18 لا پتہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمن میں صحافت اور میڈیا سے تعلق رکھنے والی شخصیات کے خلاف باغی ملیشیاؤں کی کارستانیوں کی وجہ سے ملک میں ذرائع ابلاغ کی آزادی بحرانی کیفیت سے دوچار ہے۔

یمن میں صحافیوں کی انجمن کی جانب سے جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں برس کے پہلے چھ ماہ کے دوران صحافت کے شعبے میں کام کرنے والوں کے حقوق کی خلاف ورزیوں اور پامالیوں کی شرح میں 30% کا اضافہ دیکھنے میں آیا۔ رپورٹ کے مطابق اس دوران حقوق کی پامالیوں کے 130 واقعات کا اندراج ہوا جب کہ گزشتہ برس اسی عرصے میں ان واقعات کی تعداد 100 تھی۔

اس دوران تقریبا 200 صحافی اور ذرائع ابلاغ کے ادارے باغیوں کی جانب سے ظلم و جبر کی لپیٹ میں آئے۔ ان کارروائیوں میں قتل ، اقدامِ قتل ، اغوا اور بے قاعدہ حراست شامل ہے۔ اس دوران جسمانی تشدد کے 28 واقعات کے اندراج کے علاوہ غیر قانونی عدالتی کارروائیاں بھی سامنے آئیں جن کے نتیجے میں ایک صحافی یحیی الجبیحی کو موت کی سزا دی گئی۔

یمن میں باغیوں کے قبضے کے بعد سے مسلح افراد کے ہاتھوں 21 صحافی موت کے گھاٹ اتارے جا چکے ہیں جب کہ ملیشیاؤں کی جیلوں میں 18 صحافیوں کے انجام کے بارے میں ابھی تک معلوم نہیں ہو سکا۔

مقبول خبریں اہم خبریں