.

عراق : مغربی موصل میں محصور خاندانوں کے انخلاء کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

"العربیہ" نے عراقی فورسز کی جانب سے مغربی موصل میں محصور خاندانوں کے بحفاظت انخلاء کے عمل کی تصدیق کی ہے۔ ادھر عراقی ٹی وی نے اس امر کی تصدیق کی ہے کہ عراقی فوج کی اسپیشل فورسز موصل میں پرانے شہر کے علاقے میں دریائے دجلہ کے کنارے پہنچ چکی ہیں۔عر

عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی نے نو ماہ تک جاری رہنے والے آپریشن کے بعد اتوار کے روز موصل کے آزاد کردہ شہر میں "بڑی فتح" حاصل ہونے کا اعلان کیا۔ وزیر اعظم کے دفتر کے بیان کے مطابق العبادی عراق کے دوسرے بڑے شہر موصل پہنچے اور جنگجوؤں اور عراقی عوام کو مبارک باد پیش کی۔

عراق میں اتحادی پولیس کے بیان میں اعلان کیا گیا کہ مغربی موصل میں پرانے شہر کے معرکے کے دوران داعش کے 1000 سے زیادہ عناصر ہلاک ہوئے اور 65 مسلح گاڑیاں اور گولہ بارود سے بھری 20 گاڑیاں تباہ کر دی گئیں۔ اس کے علاوہ 71 بارودی بیلٹوں ، 310 دھماکا خیز آلات اور 181 میزائلوں کو ناکارہ بنایا گیا۔ معرکے میں 5 ٹاور اور 8 سرنگیں بھی تباہ کر دی گئیں۔

اس سلسلے میں کرنل سعد جاسم نے بتایا کہ عراقی خاندانوں کو لڑائی کے علاقوں سے منتقل کر کے مقامی آبادی کے انخلاء کے واسطے محفوظ گزرگاہوں کو کھول دیا گیا۔

بہت سے شہریوں کا کہنا ہے کہ وہ داعش کے خلاف آپریشن کے دوران کئی مرتبہ یقینی موت کے منہ سے بچ نکلے۔