.

شامی باغیوں سے لڑائی میں 16 سالہ لڑکے سمیت حزب اللہ کے پانچ جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں گذشتہ چھے سال سے جاری جنگ میں متحارب سخت گیر جنگجو گروپ کم سن لڑکوں کو بھی جھونک رہے ہیں۔اس معاملے میں سنی داعش اور شیعہ ملیشیا حزب اللہ دونوں ہی ایک دوسرے سے سبقت لینے کی کوشش میں ہیں۔

لبنان کی بعض ویب سائٹس کے مطابق شام میں باغی گروپوں کے خلاف لڑائی میں حزب اللہ کے پانچ نوجوان ہلاک ہوگئے ہیں۔ان میں ایک سولہ سالہ لڑکا بھی شامل ہے۔ حزب اللہ کے جنگجو شامی صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کے شانہ بشانہ باغیوں کے خلاف لڑرہے ہیں۔

سوشل میڈیا پر شام میں بادیہ کےمحاذ پر لڑائی میں ہلاک ہونے والے نوعمر لڑکے مہدی حسن ابو ہمدان کی تصاویر پوسٹ کی گئی ہیں۔اس کی آواز کی ایک ریکارڈنگ بھی پوسٹ کی گئی ہے۔مہدی حسن کا باپ حزب اللہ کا رکن ہے اور بیٹے کے جنازے میں شرکت کے موقع پر اس کی ایک ویڈیو بھی انٹر نیٹ پر جاری کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ اقوام متحدہ کے تحت حقوق اطفال کا ادارہ یونیسیف جنگ کے لیے بچوں کی بھرتی پر کئی مرتبہ خبردار کرچکا ہے اور ہیگ میں قائم عالمی فوجداری عدالت بچوں کی بھرتی کو ایک جنگی جرم قرار دے چکی ہے۔