.

داعش کے خلیفہ ابوبکر البغدادی کی موت ہوچکی: شامی رصدگاہ کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے کہا ہے کہ اس کے پاس داعش کے خود ساختہ خلیفہ ابوبکر البغدادی کی ہلاکت کی مصدقہ اطلاع ہے۔

قبل ازیں روس کی وزارت دفاع نے ابوبکر البغدادی کی ہلاکت کی غیر مصدقہ اطلاع دی تھی اور یہ امکان ظاہر کیا تھا کہ وہ شام کے شہر الرقہ کے نواح میں داعش کے کمانڈروں کے ایک اجتماع پر روسی طیاروں کے فضائی حملے میں مارے گئے ہیں۔

لیکن امریکا نے داعش کے خلیفہ کی ہلاکت کی تصدیق نہیں کی تھی اور مغربی اور عراقی حکام نے بھی اس اطلاع کے حوالے سے اپنے شک کا اظہار کیا تھا۔شامی رصدگاہ نے منگل کے روز برطانوی خبررساں ایجنسی رائیٹرز کو البغدادی کی ہلاکت کے بارے میں بتایا ہے مگر رائیٹرز کا کہنا ہے کہ وہ آزادانہ طور پر اس اطلاع کی تصدیق نہیں کرسکتی ہے۔

واضح رہے کہ 2014ء میں عراق کے شمالی شہر موصل میں داعش کی خود ساختہ خلافت کے اعلان کے بعد سے بغدادی کی موت کی وقفے وقفے سے اطلاعات سامنے آتی رہی ہیں اور امریکا اور عراق نے بھی ماضی میں اپنی فضائی حملوں میں البغدادی کو ہلاک کرنے کے دعوے کیے تھے۔

یہ پہلا موقع ہے کہ شام میں گذشتہ چھے سال سے جاری لڑائی میں ہلاکتوں کے اعدادوشمار جاری کرنے والی شامی رصدگاہ نے ابوبکر البغدادی کی ہلاکت کی اپنے ذرائع کے حوالے سے تصدیق کی ہے اور یہ اطلاع داعش کے لیے ایک بڑا دھچکا ثابت ہوگی۔عراقی فورسز نے اسی ہفتے موصل شہر سے داعش کا صفایا کردیا ہے اور انھیں عراق اور شام دونوں ملکوں میں پے درپے شکستوں کا سامنا ہے اور ان کے زیر قبضہ علاقے چھنتے جارہے ہیں۔