ایران کا نیا ریکارڈ : ہر 4 گھنٹوں میں ایک پھانسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے ایک نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا ہے مگر یہ ریکارڈ کھیل کے میدان میں نہیں بلکہ پھانسی کی سزا پر عمل درامد کے حوالے سے سامنے آیا ہے جہاں ہر چار گھنٹوں میں ایک شخص کو پھانسی کے ذریعے موت کے گھاٹ اتارا جاتا ہے۔

ایران میں انسانی حقوق کی تنظیم کا کہنا ہے کہ تہران میں عدلیہ نے رواں ماہ کی یکم تاریخ سے اب تک سزائے موت کے 56 فیصلوں پر عمل درامد کیا ہے۔ تاہم ایرانی سرکاری میڈیا نے صرف سات افراد کو پھانسی دیے جانے کو تسلیم کیا ہے۔

تنظیم کے مطابق پھانسی دیے جانے والے افراد میں سے 31 پر منشیات کی تجارت کا الزام تھا۔ ان میں اکثریت کا تعلق ایرانی بلوچستان جیسے غریب اور پس ماندہ علاقوں سے ہے۔

مذکورہ ایرانی تنظیم جس کا صدر دفتر لندن میں ہے.. اس نے پھانسی کی اس تعداد کو غیر انسانی قرار دیتے ہوئے اس پر عمل درآمد فوری طور پر روک دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

تنظیم کے ترجمان محمود امیری کا کہنا ہے کہ "ہمیں چاہیے کہ ایرانی جیلوں میں جو کچھ ہو رہا ہے اُس کے حوالے سے عالمی برادری کے ردود عمل پر کان دھریں اس سے قبل کہ وقت گزر جائے اور کوئی انسانی المیہ پیش آئے"۔

انسانی حقوق کے کارکنان کا کہنا ہے کہ ایرانی جیلوں میں 5 ہزار سے زیادہ افراد ہیں جن کو سزائے موت کا فیصلہ سنایا جا چکا ہے۔ ان افراد کے خلاف سزا پر انہیں پیشگی آگاہ کیے بغیر ہر لمحہ اور ہر آن عمل درامد کیا جا رہا ہے۔

ایران میں انسانی حقوق کی تنظیم نے دس روز قبل جاری ایک رپورٹ میں انکشاف کیا تھا کہ رواں سال کے پہلے چھ ماہ کے دوران 239 افراد کو پھانسی دی گئی جب کہ ایرانی سرکاری ایجنسیوں کی جانب سے صرف 45 پھانسیوں کا اعلان کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں