ایران کی خطے میں امریکی افواج کو نشانہ بنانے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی مسلح افواج کے چیف آف اسٹاف بریگیڈیئر جنرل محمد باقری نے دھمکی دی ہے کہ اگر امریکا نے پاسداران انقلاب کو دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں شامل کیا تو خطے میں امریکی اڈوں اور فوجیوں کو نشانہ بنایا جائے گا۔ باقری نے یہ بات پیر کی صبح مشہد شہر میں پاسداران انقلاب کی بری فوج کے زیر انتظام ایک میلے میں کہی۔

باقری کے مطابق امریکا کا پاسداران انقلاب کو دہشت گرد گروپوں کے مساوی قرار دے کر مماثل پابندیاں عائد کرنا خطے میں امریکا ، اس کے عسکری اڈوں اور فوجیوں کے لیے بہت بڑا خطر ثابت ہو گا۔

ایرانی چیف آف اسٹاف نے تہران میں "نظام کی تبدیلی" کے حوالے سے امریکی بیان پر نکتہ چینی کرتے ہوئے پاسداران انقلاب پر نئی پابندیوں کی اہمیت کو کم کرنے کی کوشش کی۔

باقری نے امریکی ارکان کانگریس کو بھی ایرانی متنازع میزائل پروگرام پر نئی پابندیاں عائد کرنے کے نتائج سے خبردار کیا۔

یاد رہے کہ ایرانی حکومت نے جون کے اواخر میں اپنے متنازع میزائل پروگرام اور قُدس فورس کے لیے ایک خطیر بجٹ مختص کرنے کا اعلان کیا تھا جس کی مالیت تقریبا 62 کروڑ ڈالر ہے۔

ایرانی مجلس شوری (پارلیمنٹ) کے اعلان کے مطابق یہ بجٹ اُن امریکی پابندیوں اور کانگریس کے اقدامات کا مقابلہ کرنے کے لیے ہے جو پاسداران انقلاب کو دہشت گرد تنظیموں میں شامل کرنے کے واسطے کیے جا رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں