.

یمن : المخا کے محاذ پر حوثی باغی ڈھیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں فوجی ذرائع نے "العربیہ" نیوز چینل کو باور کرایا ہے کہ المخا کے محاذ پر عرب اتحادی افواج کی معاونت سے سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کے تابڑ توڑ حملوں کے بعد حوثی باغیوں بڑی حد تک ڈھیر ہو چکے ہیں۔

خالد کیمپ کے مغرب میں ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر یمنی فوج کے اچانک حملے نے المخا کے محاذ کو پھر سے بھڑکا دیا۔

زمینی ذرائع کے مطابق یمنی فوج نے رسیان کے پل کو واپس لے لیا ہے اور وہ دو شہروں الحدیدہ اور تعز کے درمیان سپلائی لائن کو منقطع کرنے میں بھی کامیاب ہو گئی۔

دوسری جانب عرب اتحادی طیاروں نے خالد عسکری کیمپ پر 30 حملے کیے۔ اس دوران باغی ملیشیا کے بھاری ہتھیاروں کے 3 ڈپوؤں کو تباہ کر دیا گیا۔

یمنی فوج نے عرب اتحاد کی معاونت سے خالد عسکری کیمپ کے مغرب میں پیش قدمی جاری رکھی۔

یمنی فوج نے پہاڑی علاقوں میں کئی ٹھکانوں پر اپنی گرفت مضبوط کرنے کے بعد السوہرہ نامی گاؤں پر بھی کنٹرول حاصل کر لیا۔ اس دوران باغی حوثی ملیشیا کو بھاری جانی اور مادی نقصان پہنچا۔ باغیوں کے ایک کمانڈر سمیت 9 ارکان ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے جب کہ ملیشیا کا بھاری عسکری ساز و سامان بھی تباہ ہو گیا۔