.

شہریوں پر تشدد کے مرتکب سعودی شہزادے کی گرفتاری کا حکم

سعودی فرمانروا شاہ سلمان کی منفرد اور مثالی انصاف پسندی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعودی نے شہریوں پر تشدد کے مرتکب ایک شہزادے سعود بن عبدالعزیز بن مساعد بن سعود بن عبدالعزیز آل سعود کی فوری گرفتاری اور اسے قرار واقعی سزا دینے کا حکم دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شاہ سلمان کی جانب سے جاری کردہ خصوصی فرمان میں حکام کو سختی سے تاکید کی گئی ہے کہ وہ شہریوں پر تشدد کرنے اور ان کی توہین کے مرتکب شہزادے اور اس کے ساتھیوں کو فوری طور پر گرفتار کر کے ان کے خلاف قانونی کارروائی شروع کی جائے اور متاثرین کو انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

شاہی فرمان میں کہا گیا ہے کہ جب تک شرعی عدالت فیصلہ نہ دے تب تک شہزادے اور اس کے ساتھیوں کو رہا نہ کیا جائے۔ اس کے ساتھ ساتھ قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ عام شہریوں اور مملکت میں مقیم غیر ملکیوں کی جان ومال اور عزت و آبرو کا تحفظ یقینی بنائیں۔

شاہ سلمان کا کہنا ہے کہ کوئی شخص قانون سے بالا تر نہیں۔ خلاف قانون کام کرنے والے افراد اپنے مقام ومرتبے، عہدے یا خاندانی اثرونفوذ کی بناء پر قانون سے بالا تر نہیں۔ ریاست کا کوئی بھی شخص اگر دوسرے پر ظلم وزیادتی کا مرتکب ہوا ہوا اسے فوری طور پر قانون کٹہرے میں لا کر متاثرہ شخص کو انصاف فراہم کیا جائے۔