.

سعودی عرب: سرحدی صوبے جازان کے نزدیک دراندازی ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب عسکری اتحاد کے طیاروں نے جمعے کے روز مملکت کے صوبے جازان کے مقابل یمنی علاقوں میں حوثی اور معزول صدر علی عبداللہ صالح کی ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر متعدد فضائی حملے کیے۔

عسکری ذرائع نے باور کرایا کہ سعودی افواج کی جاسوسی ٹیموں کے ساتھ ڈرون طیاروں نے جازان صوبے میں واقع جبل الدّود کے مقابل ایک ٹھکانے کا پتہ لگایا جہاں معزول صالح کے ریپبلکن گارڈز کا ایک بڑا افسر 25 سے زیادہ مسلح افراد کے ساتھ چُھپا ہوا تھا۔

"العربیہ" کے نمائندے کے مطابق مذکورہ کمانڈر اور دیگر مسلح عناصر سعودی عرب کی سرحد کے اندر دراندازی کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔ تاہم عرب اتحاد میں شامل سعودی فضائیہ کے ایک لڑاکا طیارے نے ان کے مقام کو بم باری کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں یہ تمام افراد ہلاک ہو گئے۔