موصل کے بعد، انبار کے مغرب میں عسکری آپریشن جلد شروع ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراق کے صوبے انبار کے گورنر صہیب الروای نے صوبے میں مغربی سرحدی علاقے کو واپس لینے کے لیے آئندہ فوجی آپریشن کے آغاز کے وقت کا انکشاف کیا ہے۔ اس میں القائم ، راوہ اور عانہ کے علاقے شامل ہیں۔

الراوی کے مطابق ان کی فورسز مشترکہ آپریشنز کی کمان کے ساتھ مل کر مغربی علاقے میں آپریشن کے جلد شروع کیے جانے اور شہریوں کو محفوظ گزر گاہوں کی فراہمی پر کام کریں گی۔

انہوں نے بتایا کہ مقامی اور مرکزی حکومتیں مل کر پڑوسی ممالک کے ساتھ تمام سرحدی راستے کھولنے کے لیے کام کر رہی ہیں۔
عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی نے 9 جولائی کو اعلان کیا تھا کہ موصل شہر کو تقریبا 9 ماہ تک جاری رہنے والے عسکری آپریشن کے بعد داعش تنظیم سے مکمل طور پر آزاد کرا لیا گیا۔

عراقی افواج نے موصل کو آزاد کرانے کے لیے فوجی آپریشن کا آغاز 17 اکتوبر 2016 کو کیا تھا۔ العبادی کی جانب سے موصل میں فتح حاصل ہونے کا اعلان تین برس قبل عراق کے دوسرے بڑے شہر پر داعش کے قبضے کے بعد تنظیم کی سب سے بڑی ہزیمت ہے۔

انسداد دہشت گردی سے متعلق عراقی فورسز کا کہنا ہے کہ موصل میں جاری کارروائیاں اس وقت داعش تنظیم کی باقیات کے تعاقب تک محدود رہ گئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں