.

یمن: المخا کے سنگم پر یمنی فوج کا کنٹرول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرکاری فوج نے شدید لڑائی کے بعد تعز شہر کے مغرب میں المخا کے مرکزی سنگم پر کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ معرکے میں حوثی اور معزول صالح کی باغی ملیشیاؤں کے 8 ارکان مارے گئے۔ باغیوں کی پسپائی کے دوران عسکری ساز و سامان بھی جل کر تباہ ہو گیا۔

علاوہ ازیں یمنی فوج حجّہ صوبے کے مغرب میں واقع شہر میدی میں باغی ملیشیا کی امداد کے لیے استعمال ہونے والے آخری راستے پر بھی اپنا کنٹرول مضبوط کر لیا ہے۔

یہ کامیابی رواں سال کی ابتدا میں شروع ہونے والے فوجی آپریشن "سنہرا نیزہ" کا حصہ ہے۔ فوجی ذرائع نے اس تازہ ترین پیش رفت کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کے ذریعے تعز کا محاصرہ بھی ختم ہو گا ، المخا شہر کا تحفظ یقینی بنے گا اور مغربی یمن میں تعز اور الحدیدہ صوبے کے درمیان راستہ بھی منقطع ہو جائے گا۔

پانچویں عسکری زون میں ایک فوجی ذریعے نے باور کرایا کہ یہ پیش رفت یمنی فوج کی جانب سے جمعرات کی صبح کیے جانے والے حملے کے بعد سامنے آئی ہے جس کے دوران باغی ملیشیا کو بھاری جانی و مادی نقصان اٹھانا پڑا۔

ادھر سعودی عرب کے زیر قیادت عرب فوجی اتحاد کے طیاروں نے المخا کے سنگم کے اطراف باغیوں کے ٹھکانوں اور مجمعوں کو حملوں کا نشانہ بنایا۔ اس دوران یمنی فوج کے توپ خانوں نے تعز کے شمال میں اسٹریٹ 50 پر باغیوں کی ایک گاڑی کو تباہ کر دیا جس کے نتیجے میں اس میں سوار تمام افراد مارے گئے۔