.

شام: حمص میں روسی فوج کی تعیناتی کا دعوی، شامی کارکنان کی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی خبر رساں ایجنسیوں نے بعض تصاویر اور وڈیوز جاری کی ہیں جن کے بارے میں دعوی کیا گیا ہے کہ یہ شام میں حمص کے شمال میں واقع دیہی علاقوں میں فائربندی کے معاہدے کی نگرانی کرنے والے روسی فوجی پولیس کے اہل کاروں کی ہیں۔ تاہم شامی کارکنان نے اس کی تردید کرتے ہوئے باور کرایا ہے کہ یہ وڈیو حمص کی نہیں بلکہ حماہ شہر کے جنوب میں موجود روسی فوجیوں کی ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل شامی مذاکراتی سپریم کمیٹی کے ترجمان منذر ماخوس بھی یہ باور کرا چکے ہیں کہ کشیدگی کم کرنے کے علاقے (سیف زون) سے متعلق معاہدہ شک و شبہات میں لپٹا ہوا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو تحفظات ہیں مگر اس کے باوجود روسی فوجیوں کو ابھی تک فائر بندی کی نگرانی کے لیے حمص میں تعینات نہیں کیا گیا ہے۔

حماہ کے جنوبی دیہات کے کارکنان کے مطابق مذکورہ علاقے میں روسی فوجیوں کی موجودگی کا سبب یہ ہے کہ وہ بشار حکومت کے زیر کنٹرول گاؤں دیر الفردیس اور اپوزیشن کے زیر کنٹرول علاقے حربنفسہ کے درمیان گزرگاہ کھولنے کی راہ ہموار کرنا چاہتے ہیں۔