.

شاہ عبداللہ دوم پانچ سال کے بعد سوموار کو رام اللہ کا دورہ کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن کے شاہ عبداللہ دوم پانچ سال کے بعد آیندہ سوموار کو مغربی کنارے کے شہر رام اللہ کا دورہ کریں گے اور فلسطینی صدر محمود عباس سے ملاقات کریں گے۔

صدر محمود عباس کی جماعت فتح کے ایک سینیر عہدہ دار محمد شطیح نے ہفتے کے روز ایک بیان میں بتایا ہے کہ دونوں لیڈر اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان امن عمل کی بحالی کے لیے کوششوں کے بارے میں تبادلہ خیال کریں گے ۔ مشرق وسطیٰ امن مذاکرات 2014ء سے معطل چلے آرہے ہیں ۔

شاہ عبداللہ دوم کا دسمبر 2012ء کے بعد رام اللہ کا یہ پہلا دورہ ہوگا ۔واضح رہے کہ اردن اسرائیل کے زیر قبضہ شہر بیت المقدس میں واقع مسلمانوں کے پہلے قبلہ اوّل مسجد الاقصیٰ سمیت تمام اسلامی مقدسات کا متولی ملک ہے۔

اردن نے بھی گذشتہ ماہ مسجد الاقصیٰ کے داخلی دروازوں پر اسرائیلی فوج کی جانب سے میٹل ڈیٹکٹروں اور سکیورٹی کیمروں کی تنصیب کے ردعمل میں پیدا ہونے والے بحران کے خاتمے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔فلسطینیوں نے اسرائیل کے ان اقدامات کے خلاف شدید احتجاج کیا تھا اور انھوں نے میٹل ڈیٹکٹروں کے ذریعے گذر کر مسجد الاقصیٰ میں جانے سے انکار کردیا تھا۔ تاہم اسرائیل نے دو ایک روز کے بعد ہی امریکا کے دباؤ اور عرب ممالک کے احتجاج کے بعد نصب کیے گئے میٹل ڈیٹکٹروں اور دوسرے آلات کو ہٹا دیا تھا۔