.

فضائی سروس کے بحران کوسیاسی رنگ دینے کی قطری کوشش مسترد

قطر اور اس کے پڑوسی ممالک تنازعات کسی اور فورم پر حل کریں:ایکاؤ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی جہاز رانی کے حقوق کے نگراں ادارے’بین الاقوامی ایوی ایشن آرگنائزیشن‘[ایکاؤ] نے قطر کی جانب سے فضائی جہاز رانی کے معاملے کو سیاسی رنگ دینے کوشش مسترد کردی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ’ایکاؤ‘ کی جانب سے قطر کی شکایات کے جواب میں جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ قطر اور اس کے پڑوسی عرب ملکوں کے درمیان پیدا ہونے والا تنازع سیاسی نوعیت کا ہے۔ قطر اوراس کا بائیکاٹ کرنے والے ملکوں کو باہمی سیاسی تنازعات ’ایکاؤ‘ سے باہر دنیا کے دوسرے بین الاقوامی فورمز پر حل کرنے چاہئیں۔ ایکاؤ محض فضائی جہاز رانی کے حقوق کی نگران تنظیم ہے جس کا سیاسی بحرانوں اور تنازعات کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔

’ایکاؤ‘ کی جانب سے قطر کی شکایت کےرد عمل میں جاری کردہ بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے سعودی عرب کی سول ایوی ایشن اتھارٹی کےچیئرمین انجینیر عبدالحکیم بن محمد التمیمی نے کہا کہ ’ایکاؤ‘ کا رد عمل تنظیم کی غیر جانب داری کا واضح ثبوت ہے۔ تنظیم نے یہ ثابت کیا ہے کہ جن مقاصد کے تحت اس کی تشکیل عمل میں لائی گئی تھی ادارہ ان مقاصد پر سختی سے کار بند ہے۔ اس کا اصل مقصد فضائی سروس کی سلامتی اور پوری دنیا میں فضائی جہاز رانی کے حقوق کو یقینی بنانا ہے۔

انجینیر التمیمی اور اس کی نگراں کونسل نے قطر اور دوسرے ممالک کے درمیان پائے جانے والے تنازع کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش کو مسترد کیے جانے کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ ایکاؤ کی طرف سے قطر اور دہشت گردی کے خلاف سرگرم گروپ چار کے مابین پائے جانے والےسیاسی تنازع کو تنظیم کے فورم سے باہر حل کرنے پر زور دے کر اپنی غیر جانب داری کا ثبوت دیا ہے۔