.

امریکی بمباری سے عراق و شام کی سرحد پرایرانی جنرل ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی خبر رساں اداروں کے مطابق عراق اور شام کی سرحد پر الحشد الشعبی شیعہ ملیشیا اور ایرانی فوجیوں کی رہ نمائی کے لیے تعینات ایک ایرانی جنرل امریکی جنگی طیاروں کی بمباری سے ہلاک ہوگیا۔

خبر رساں ایجنسی ’فارس‘ کے مطابق شمالی ایران کے کلستان ضلع میں پاسداران انقلاب کی طرف سے جاری کردہ بیان میں میجر جنرل مصطفیٰ خوش محمدی کی عراق میں ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جنرل خوش محمدی نے عراق اور شام میں اہل بیت اطہار کے مزارات کا دفاع کرتے ہوئے اپنی جان کی قربانی دی ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق جنرل خوش محمدی پاسداران انقلاب کے سابق عہدیدار ہیں اور وہ طویل عرصے سے شام اور عراق میں عسکری مہمات میں خدمات انجام دے رہے تھے۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق مقتول جنرل خوش محمدی پاسداران انقلاب کے بریگیڈ 45 سے وابستہ رہے۔ وہ انٹیلی جنس بریگیڈ کے بھی ایک پیشہ ور افسر تھے۔ انہیں کئی بار رضاکارانہ طور پر شام بھی بھیجا گیا۔

خبر رساں اداروں کے مطابق بسیج ملیشیا کے ایک جنگجو سجاد باوی بھی شام میں ہلاک ہوئے ہیں تاہم اس کی ہلاکت کی مزید تفصیل سامنے نہیں آئی۔

خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے شام میں ایرانی پاسداران انقلاب کے 5 جنگجو جن میں القدس ملیشیا کا ایک سینیر افسر بھی شامل تھا ہلاک ہوگئے تھے۔