.

سعودی عرب کے بعد مقتدیٰ الصدر کی سرکاری دورے پر امارات آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے سرکردہ شیعہ سیاسی اور مذہبی رہ نما اور الصدر گروپ کے سربراہ مقتدیٰ الصدر اتوار کو متحدہ عرب امارات کی دعوت پر ابو ظہبی پہنچے جہاں انہوں نے ولی عہد محمد بن زاید سے ملاقات کی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اس ملاقات میں دو طرفہ سیاسی تعلقات، عراق میں امن وامان کی موجودہ صورت حال اور علاقائی مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

خیال رہے کہ مقتدیٰ الصدر کا سعودی عرب کے بعد یہ دوسرے خلیجی ملک کا دورہ ہے۔ گذشتہ ہفتے مقتدیٰ الصدر گیارہ سال کے بعد سعودی عرب کے دورے پر ریاض آئے تھے جہاں انہوں نے سعودی ولی عہد سے ملاقات کی تھی۔

گذشتہ روز ابو ظہبی میں مقتدیٰ الصدر سے ملاقات کے دوران ابو ظہبی کے ولی عہد نے عراق کے استحکام، ترقی اور دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں کامیابی کی خواہش کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ متحدہ امارات عراق کی عرب دنیا میں کردار کی بحالی کے ساتھ ساتھ عالم عرب میں استحکام کا خواہاں ہے۔

امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق مقتدیٰ الصدر سے ملاقات میں ولی عہد نے کہا کہ عراقی اور اماراتی قوموں کے مابین طویل تاریخی اور ثقافتی تعلقات پائے جاتے ہیں۔ انہوں نے متحدہ عرب امارات کی تعمیر وترقی میں عراقی شہریوں کی مساعی کی تعریف کی۔

انہوں نے عراقی رہ نما سے بات کرتے ہوئے موصل میں داعش کو شکست فاش دیے جانے پرانہیں مبارک بھی پیش کی۔