.

عراق : بجلی گھر پر خودکش بم حملے میں سات افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے شمالی شہر سامراء کے نزدیک ایک سرکاری پاور اسٹیشن پر خودکش بم حملے میں سات افراد ہلاک اور تیرہ زخمی ہوگئے ہیں جبکہ دھماکے کے بعد یہ پاور اسٹیشن بند ہوگیا ہے۔

عراقی حکام کے مطابق تین مسلح افراد نے مقامی وقت کے مطابق ہفتے کو علی الصباح تین بجے پاور اسٹیشن پر حملہ کیا تھا۔ انھوں نے خودکش جیکٹیں پہن رکھی تھیں۔انھوں نے پہلے پاور اسٹیشن کے داخلی دروازے پر دستی بم پھینکے تھے اور پھر اس میں داخل ہوگئے تھے۔

ایک ملازم راید خالد نے بتایا کہ ’’ میں رات کی شفٹ میں کام کررہا تھا۔اچانک میں نے فائرنگ اور دھماکوں کی آواز سنی۔اس کے چند منٹ کے بعد فوجی وردی میں ملبوس ایک حملہ آور کو دیکھا ۔ وہ کھڑکیوں کے راستے دستی بم پھینک رہا تھا‘‘۔

سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ ان تینوں مسلح افراد نے مختصر وقت کے لیے پاور اسٹیشن کا کنٹرول سنبھال لیا تھا لیکن پولیس تین گھنٹے کی کارروائی کے بعد اس کا کنٹرول واپس لینے میں کامیاب ہوگئی ہے۔حملے میں چار پولیس اہلکار اور تین ملازم مارے گئے ہیں۔

سکیورٹی فورسز کے اہلکار عمارت کے اندر ایک حملہ آور کو گھیرے میں لینے میں کامیاب ہوگئے تھے لیکن اس نے ایک پاور جنریٹر کے نزدیک خود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا جس سے وہاں آگ لگ گئی۔

سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ دوسرے دونوں حملہ آور جھڑپ میں مارے گئے ہیں یا انھوں نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا ہے۔محکمہ بجلی کے حکام کا کہنا ہے کہ پاور اسٹیشن کی بحالی کے لیے کام جاری ہے اور یہاں سے بجلی کی ترسیل کی بحالی میں ابھی کچھ وقت لگے گا۔فوری طور پر کسی گروپ نے اس بم حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔