داعش نے شام میں دو روسی فوجی مار ڈالے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روسی وزارت دفاع نے بتایا ہے کہ شام کے مشرقی شہر دیر الزور کے قریب انتہا پسند تنظیم داعش کے مسلح جنگجووں کی گولا باری کی زد میں آ کر دو روسی فوجی ہلاک ہو گئے۔

خبر رساں اداروں نے روسی وزارت دفاع کی طرف سے جاری ہونے والے بیان کے حوالے سے بتایا ہے کہ گولا باری کی زد میں آنے والا ایک روسی فوجی موقع ہی پر ڈھیر ہو گیا جبکہ دوسرا ہستپال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔

تفصیلات کے مطابق ہلاک ہونے والے روسی فوجی اپنے مصالحتی مرکز کی گاڑیوں کے قافلے میں شامل تھے جو متحارب گروپوں کے درمیاں صلح کرانے جا رہے تھے۔

ادھر شام کے سرکاری ٹیلی ویژن نے بتایا ہے کہ شامی فوج اور اس کی حلیف فورسز دیر الزور کی اس پاکٹ سے صرف تین کلومیٹر کے فاصلے پر ہیں جو بشار الاسد کے زیر نگیں ہے اور وہاں موجود داعش مکمل طور پر ان کے گھیرے میں آ چکی ہے۔

شامی فوج اور اس کے اتحادی دریائے فرات کے کنارے واقع اس شہر کو واگزار کرانے کے قریب پہنچ گئے ہیں۔ القاعدہ نے شامی فوج کی ایک بیس اور تقریبا 93 ہزار شہریوں کو کئی برسوں سے محاصرے میں لے رکھا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں