یمن کے حوثی باغی نے مکینوں سمیت گھر دھماکے سے اڑا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں باغی حوثی ملیشیا نے پیر کے روز ایک گھناؤنے جرم کا ارتکاب کرتے ہوئے تعز صوبے میں ایک گھر کو اس کے مکینوں سمیت دھماکے سے تباہ کر دیا۔ حوبان کے علاقے میں کی جانے والی اس بے رحمانہ کارروائی کے نتیجے میں ایک یمنی شہری اور اس کے دو بچے جاں بحق ہو گئے۔

حوثیوں اور معزول صدر علی عبداللہ صالح کے زیر کنٹرول علاقے حوبان میں مقامی آبادی نے بتایا کہ حوثی مسلح عناصر نے عوامی مزاحمت کاروں کے ایک کمانڈر خلیل التمیمی کی تلاش میں اس کے رشتے دار احمد عبدالرحیم کے گھر پر دھاوا بول دیا اور بعد ازاں اس گھر کو دھماکا خیز مواد کے ذریعے تباہ کر دیا۔ عینی شاہدین کے مطابق کارروائی کے نتیجے میں گھر میں موجود یمنی شہری احمد عبدالرحیم ، اس کی 5 سالہ بیٹی سعاد اور 11 سالہ بیٹا عبدالرحیم جاں بحق ہو گئے۔ ابھی تک ملبے کے نیچے سے لاشوں کو نہیں نکالا جا سکا۔

عینی شاہدین نے یہ بھی بتایا کہ مذکورہ گھر کو دھماکے سے اڑانے کے بعد حوثی ملیشیا نے گھر کے مالک احمد عبدالرحیم کے رشتے داروں اور پڑوسیوں میں 5 افراد کو اغوا کر کے نامعلوم مقام پر پہنچا دیا۔

حوثی ملیشیا یمن کے کئی صوبوں میں اپنے مخالفین کے گھروں کو دھماکے سے تباہ کرنے کی پالیسی پر کاربند ہے۔ سال 2013 میں اپنے معرکوں کے آغاز سے اب تک وہ سیکڑوں گھر دھماکوں سے تباہ کر چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں