.

امیر قطر کا ولی عہد کوفون، مذاکرات کی خواہش کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر کے امیر الشیخ تمیم بن حمد آل ثانی نے سعودی عرب کے ولی عہد نائب وزیراعظم ووزیردفاع شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا ہے۔ جمعہ کے روز ولی عہد کے ساتھ بات چیت میں امیر قطر نے تمام تنازعات اور اختلافات مذاکرات کی میز پرحل کرنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ امیر قطر کا کہنا تھا کہ ان کا ملک بائیکاٹ کرنےوالے چار ممالک کے اعتراضات دور کرنے اور مشترکہ مفادات کے تحفظ کی ضمانت پر بات چیت کے لیے تیار ہے۔

العربیہ چینل کی رپورٹ کے مطابق سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے امیر قطر کے فون کا خیر مقدم کیا اور ان کی جانب سے بات چیت کے ذریعے تمام مسائل کے حل پرآمادگی کو سراہا۔

دونوں رہ نماؤں کے درمیان طے پائے والے مفاہمتی امور کی تفصیلات جلد سامنے آجائیں گی۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق امیر قطر اور ولی عہد کے درمیان ہونے والی بات چیت کے حوالے سے سعودی عرب متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر کو اعتماد میں لے گا۔

قبل ازیں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی امیر قطر پر ریاض سربراہ کانفرنس میں دہشت گردی کے خلاف طے پائے والے نکات پرعمل درآمد پر زور دیا تھا۔

وائیٹ ہاؤس کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امیر قطر سے ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے ان پر دہشت گردی کے خلاف جنگ میں موثر کردار ادا کرنے، دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے اور انتہا پسندانہ نظریات کے خلاف مل کر لڑنے کی ضرورت پر زور دیا۔

جمعرات کو امریکا کے دورے کے دوران امیر کویت الشیخ صباح الاحمد الصباح نے ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ قطر دہشت گردی کے خلاف یکساں موقف رکھنے والے چار عرب ممالک کے تمام 13 مطالبات پرعمل درآمد کے لیے بات چیت پر تیار ہے۔

امیر کویت نے خلیجی بحران کو جلد از جلد حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ کویت قطر کو اس کے تحفظات دور کرنے کے لیے ضمانت دینے پر تیار ہیں۔