بغداد کے ساتھ بات چیت ریفرنڈم کے بعد ہو گی : بارزانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی کردستان کے صدر مسعود بارزانی نے عرب لیگ کے سکریٹری جنرل احمد ابو الغیط کی اس درخواست کو مسترد کر دیا ہے جس میں کردستان کی علاحدگی سے متعلق 25 ستمبر کو مقررہ ریفرنڈم ملتوی کرنے کے لیے کہا گیا تھا۔

عرب لیگ نے کردوں سے یہ مطالبہ بھی کیا کہ وہ ریفرنڈم کرانے سے پہلے بغداد کے ساتھ بات چیت کریں۔ تاہم بارزانی نے واضح کیا کہ کردستان کا وفد ریفرنڈم سے پہلے نہیں بلکہ اس کے بعد بغداد کا رخ کرے گا۔

عرب لیگ کے سکریٹری جنرل کردستان ریجن اور عراق کے درمیان ریفرنڈم کے مسئلے کے حل کے لیے اپنی کوششوں کے سلسلے میں بغداد سے اربیل شہر پہنچے تھے۔

ادھر عراقی حکومت کے ترجمان سعد الحدیثی نے "الحدث" نیوز چینل کے ساتھ انٹرویو میں مطالبہ کیا ہے کہ "انفرادی بیان بازی پر روک لگائی جائے جو اشتعال انگیزی کا سبب بن سکتی ہے"۔ انہوں نے سکیورٹی انارکی پیدا ہونے سے بھی خبردار کیا۔ الحدیثی کے مطابق بغداد نے اربیل کو آگاہ کر دیا ہے کہ اس وقت عراق کی یک جہتی برقرار رکھنے اور داعش کے ساتھ جنگ کے اختتام تک اس ریفرنڈم کو ملتوی کر دینے کی ضرورت ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں