.

امریکا اور روس کے دیر الزور پر فضائی حملے، 28 شامی شہری ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے مشرقی صوبے دیر الزور میں امریکا کی قیادت میں داعش مخالف اتحاد اور روسی لڑاکا طیاروں کے الگ الگ فضائی حملوں میں اٹھائیس شہری ہلاک ہو گئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کے مطابق سب سے تباہ کن فضائی حملہ دریائے فرات کے مشرقی کنارے میں واقع ایک گاؤں الشہابت پر کیا گیا ہے۔اس میں ایک ہی خاندان کے بارہ افراد مارے گئے ہیں۔مہلوکین میں پانچ بچے بھی شامل ہیں۔

اس نے بتایاہے کہ اس گاؤں میں جہادیوں اور امریکا کی قیادت میں شامی جمہوری فورسز کے درمیان شدید لڑائی ہورہی ہے۔ دریائے فرات صوبہ دیر الزور کے بیچوں بیچ بہتا ہے۔

شامی فوج دریا کے مغربی کنارے کے علاقے میں الگ سے داعش کے جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کررہی ہے اور اس کو روس کی فضائی مدد حاصل ہے۔شامی رصدگاہ کے سربراہ رامی عبدالرحمان کے مطابق روسی لڑاکا طیاروں نے دریائے فرات کے مغربی کنارے میں خیموں پر بمباری کی ہے۔

ان خیموں میں ایک گاؤں زغیر شامیہ سے جانیں بچا کر آنے والے شا می شہری رہ رہے تھے لیکن انھیں یہاں بھی اماں نہیں ملی اور پانچ بچوں سمیت سولہ افراد مارے گئے ہیں۔

رصدگاہ کے مطابق گذشتہ تین روز کے دوران میں روسی لڑاکا طیاروں نے دیر الزور میں تباہ کن بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں دسیوں شہری ہلاک اور زخمی ہو گئے ہیں۔