.

عراق : داعش کے دوخودکش بم حملوں میں 74 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے جنوبی شہر ناصریہ میں جمعرات کے روز سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے دو بم حملوں میں 74 افراد ہلاک اور 94 سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

ناصریہ کے محکمہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل جاسم الخالد نے ایک بیان میں ایک ریستوران اور ایک چیک پوائنٹ پر بم حملوں اور فائرنگ میں ان ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔۔ مہلوکین اور زخمیوں میں ایرانی زائرین بھی شامل ہیں جو ناصریہ سے دو جنوبی شہروں نجف اشرف اور کربلا کی جانب جارہے تھے اور وہاں کھانا کھانے کے لیے رُکے تھے۔

عراقی حکا م نے بتایا ہے کہ شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی کی وردی میں ملبوس مسلح حملہ آوروں نے پہلے ریستوراں میں دوپہر کے کھانے پر موجود لوگوں پر فائرنگ کی تھی اور اس کے چند لمحے کے بعد اس کے نزدیک واقع ایک سکیورٹی چیک پوائنٹ پر ایک خودکش بمبار نے اپنی بارود سے بھری کار کو دھماکے سے اڑا دیا۔

داعش نے اپنی نیوز ایجنسی اعماق کی ویب سائٹ پر جاری کردہ ایک بیان میں ان دونوں حملوں کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے اور کہا ہے کہ اس کے خودکش بمباروں نے ناصریہ میں ایک ریستوراں اور سکیورٹی چیک پوائنٹ پر دھماکے کیے ہیں اور ان میں دسیوں افراد ہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔