عمر رسیدہ مصری خاتون کی موت ، بیٹی نے حقیقت بیان کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر میں جمعے کے روز فوت ہونے والی 85 سالہ عمر رسیدہ خاتون زینب السید محفوظ کے اہل خانہ نے اُن کی موت کی اصل وجہ کا انکشاف کیا ہے۔ ہفتے کے روز سوشل میڈیا پر سرگرم حلقوں نے مذکورہ خاتون کے بیٹے پر الزام عائد کیا تھا کہ اُس نے اپنی بیوی کو خوش کرنے کے واسطے ماں کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا یہاں تک کہ وہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھی۔

زینب خاتون کی سب سے بڑی بیٹی رجاء العربی نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کو بتایا کہ ان کی ماں پر فالج کا حملہ ہوا تھا جس کے بعد وہ مبرہ بورسعيد ہسپتال میں انتقال کر گئیں۔ رجاء نے باور کرایا کہ اس کا بھائی ان کی ماں کی موت کے حوالے سے بے قصور ہے اور اس سلسلے میں سوشل میڈیا پر جو کچھ پھیلا ہوا ہے وہ سب بے بنیاد ہے۔

رجاء کے مطابق اس کی ماں اپنی بہو امل کی سراہتی تھی اور اس کے اچھے برتاؤ کی تعریف کیا کرتی تھی۔ رجاء کے مطابق سوشل میڈیا پر اس کے بھائی اور بھابھی کے خلاف مہم کا مقصد چند گھٹیا سوچ کے حامل افراد کی جانب سے خاندان کو بدنام کرنا ہے۔

رجاء نے بتایا کہ اس کی ماں کو 13 ستمبر کو مبرہ بورسعید ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ اس موقع پر چوتھی منزل کا نجی کمرہ رجاء کے نام سے ہی لیا گیا تھا۔ مریضہ 14 ستمبر تک اسی کمرے میں رہی اور پھر اسے انتہائی نگہداشت کے یونٹ منتقل کر دیا گیا جہاں وہ جمعے کے روز انتقال کر گئی۔ رجاء کے مطابق ماں کے انتقال تک اس کے بھائی بھابھی سمیت خاندان کے تمام افراد مسلسل متوفیہ کو دیکھنے کے لیے آتے رہے۔

زینب خاتون کی آنکھوں کے نیچے نیل کے نشان کے حوالے سے ان کی بیٹی رجاء کا کہنا ہے کہ یہ نشانات فالج کے حملے کے نتیجے میں زمین پر گرنے کے سبب آئے کیوں کہ اس دوران زینب خاتون کی عینک بھی ٹوٹ گئی تھی۔ رجاء کے مطابق اس کا بھائی اور بھابھی دونوں بے قصور ہیں اور سوشل میڈیا پر اس حوالے سے تمام تر باتیں جھوٹ پر مبنی ہیں۔

یاد رہے کہ مصر میں سوشل میڈیا کے حلقوں کی جانب سے ہفتے کے روز بڑے پیمانے پر مہم سامنے آئی جس میں کہا گیا کہ "ہم زینب خاتون کی ہلاکت کے سلسلے میں انصاف اور حق چاہتے ہیں"۔ ان حلقوں نے خاتون کے بیٹے کو ماں کی موت کا مورود الزام ٹھہرایا کہ اس نے اپنی بیوی کو خوش کرنے کے واسطے خاتون کو تشدد کا نشانہ بنایا اور موت کی نیند سلا دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں