.

قطر کا برطانیہ سے 24 لڑاکا طیارے خریدنے کا معاہدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر نے اعلان کیا ہے کہ اس نے برطانوی حکومت کے ساتھ ایک مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے ہیں جس کے تحت دوحہ ٹائیفون ماڈل کے 24 برطانوی لڑاکا طیارے خریدے گا۔ یہ مفاہمتی یادداشت خلیجی بحران کے آغاز کے بعد سے قطر کی جانب سے اربوں ڈالر کے ہتھیار اور فوجی ساز و سامان خریدنے کے معاہدوں کی ایک کڑی ہے۔

اتوار کے روز مذکورہ مفاہمتی یادداشت پر دستخط قطر کے وزیر مملکت برائے دفاعی امور خالد بن محمد العطیہ کے لندن کے دورے کے موقع پر ہوئے ہیں۔ قطری حکومت کے بیان کے مطابق العطیہ کے دورے کا مقصد دفاع اور انسداد دہشت گردی کے شعبوں میں دوحہ اور لندن کے درمیان تعاون کو مضبوط بنانا ہے۔

سعودی عرب ، امارات ، مصر اور بحرین نے 5 جون کو قطر کے ساتھ سفارتی اور تجارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے اور ساتھ ہی دوحہ کے ساتھ تمام فضائی اور سمندری آمد و رفت کو معطل کر دیا۔ اس اقدام کا سبب دوحہ کی جانب سے دہشت گردی کی سپورٹ اور پڑوسی ممالک کے معاملات میں اس کی مداخلت ہے۔

مفاہمتی یادداشت پر قطر کے وزیر مملکت برائے دفاعی امور اور ان کے برطانوی ہم منصب مائیکل فیلن نے دستخط کیے۔

ادھر برطانوی وزارت دفاع نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "یہ قطر کے ساتھ پہلا بڑا دفاعی معاہدہ ہو گا جو کئی سالوں کی بات چیت کے بعد سامنے آیا ہے"۔

یورو فائٹر ٹائیفون طیارہ برطانوی ، فرانسیسی اور اطالوی کمپنیوں کا مشترکہ منصوبہ ہے جس کے ذریعے برطانیہ میں 40 ہزار افراد کو ملازمت ملی۔

قطر نے رواں سال جون میں بھی امریکی کمپنی بوئنگ کے ساتھ ایف-15 طیاروں کی خریداری کے سلسلے میں 12 ارب ڈالر مالیت کے سمجھوتے پر دستخط کیے تھے۔ اس کے علاوہ دوحہ نے اطالیہ کے ساتھ بھی 7 بحری جنگی جہازوں کی خریداری کا معاہدہ کیا جس کی مالیت 5 ارب یورو (6 ارب ڈالر) ہے۔