.

حماس کی انتظامیہ تحلیل ہونے کے بعد، فلسطینی حکومت غزہ پٹی میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی تحریک "فتح" کی مرکزی کمیٹی کے رکن اور شہری امور کی کمیٹی کے سربراہ فلسطینی وزیر حسین الشیخ نے بتایا ہے کہ صدر محمود عباس کی ہدایت پر حکومت اپنی تمام وزارتوں اور باڈیز کے ساتھ پیر کے روز غزہ پٹی کا رخ کر رہی ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجسنی وفا کے مطابق الشیخ نے بتایا کہ "فلسطینی حکومت قاہرہ میں طے پائے جانے والے معاہدے پر فوری عمل درامد شروع کرے گی تا کہ قومی وفاقی حکومت نظام اور قانون کے مطابق اپنی معمول کی ذمے داریاں انجام دے سکے"۔

فلسطینی تنظیم حماس نے 17 ستمبر کو غزہ پٹی میں اپنی انتظامی کمیٹی کو تحلیل کرنے اور عام انتخابات کرانے پر آمادگی کا اظہار کیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی فتح تحریک کے ساتھ طویل عرصے سے جاری اختلاف بھی اپنے اختتام کو پہنچ گیا۔ حماس نے کہا تھا کہ وہ قومی وفاقی حکومت کو غزہ پٹی میں اپنی ذمے داریاں پوری کرنے کی اجازت دے گی۔

دوسری جانب قومی وفاقی حکومت کے سرکاری ترجمان یوسف المحمود کا کہنا ہے کہ فلسطینی وزیراعظم رامی الحمد اللہ نے صدر محمود عباس کے ساتھ مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا ہے کہ حکومت اپنا ہفتہ وار اجلاس آئندہ ہفتے کے بیچ میں غزہ پٹی میں منعقد کرے گی۔ فلسطینی وزیراعظم اپنے وزراء کے ساتھ پیر کے روز غزہ پٹی پہنچ رہے ہیں جہاں وہ منگل کے روز اجلاس میں شرکت کریں گے۔